ایوان قائداعظم نئی نسل کی نظریاتی تعلیم و تربیت کا گہوارہ ہے: مقررین

11 فروری 2018

لاہور(خصوصی رپورٹر)ایوانِ قائداعظم نئی نسل کی نظریاتی تعلیم و تربیت کا گہوارہ اور افکارِ قائداعظم کے فروغ کا عالمی مرکز ثابت ہو گا۔ اس سے قائد فہمی کو فروغ حاصل ہو گا ، ہم پوری قوم بالخصوص نئی نسل کو بتا رہے ہیں کہ قائداعظم نے ہمیں یہ تحفہ(پاکستان) بنا کردیا ہے۔ نظریۂ پاکستان کی اساس کلمۂ طیبہ یعنی اللہ تعالیٰ کی وحدانیت اور نبی کریمؐ کی رسالت پر ہے۔ نظریۂ پاکستان ٹرسٹ کے تحت جاری پاکستان آگہی پروگرام کا بنیادی مقصد طلبہ کو پاکستان کی عظمت و اہمیت سے روشناس کرانا۔ ایوان قائداعظم کی تعبیر کا تصور مجید نظامی مرحوم نے پیش کیا اور اُن کی ولولہ انگیز قیادت کا اعجاز تھا کہ یہ ایوان محدود وسائل کے باوجود پایۂ تکمیل کو پہنچ گیا ہے۔ ایوان کی تکمیل میں وزیراعلیٰ شہباز شریف کے مالی و اخلاقی تعاون کوخراج تحسین پیش کرتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار مقررین نے ایوان قائداعظم میں سرگرمیوں کے ایک سال مکمل ہونے پر خصوصی اجلاس کے دوران کیا۔نظامت کے فرائض سیکرٹری نظریۂ پاکستان ٹرسٹ شاہد رشید نے انجام دیے۔ وائس چیئرمین نظریۂ پاکستان ٹرسٹ پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد نے کہا کہ قائداعظم ، علامہ محمد اقبال اور مادرملت محترمہ فاطمہ جناح ہماری آئیڈیل شخصیات ہیں ،یہ مشاہیر اسلامی اصولوں پر سختی سے عمل پیرا تھے۔ معروف ماہر قانون جسٹس(ر) خلیل الرحمن خاں نے کہا کہ ایوان قائداعظمؒ کی تعمیر کا مقصد افکارِ قائداعظمؒ کو بہتر طریقے سے عوام تک پہنچانا ہے۔ چیف کوآرڈی نیٹر نظریۂ پاکستان ٹرسٹ میاں فاروق الطاف نے کہا کہ ہمارے سیاسی قائدین نے افکار قائداعظم سے رہنمائی حاصل نہیں کی اور یہی وجہ ہے کہ ملکی مسائل حل طلب ہیں ۔ میاں ولید احمد شرقپوری نے کہا کہ نظریۂ پاکستان ٹرسٹ تحریک پاکستان کے روحانی پہلوئوں کو اجاگر کرنے میں اپنا کردار ادا کر رہا ہے۔