شامی فوج نے اسرائیلی جنگی طیارہ مار گرایا دونوں پائلٹ زخمی

11 فروری 2018

تل ابیب (این این آئی+ اے ایف پی) اسرائیل نے کہا ہے کہ اس کا ایک جنگی طیارہ شامی توپوں کے فائر کے دوران اس کی سرحدوں کے اندر مار گرایا گیا ہے۔ طیارے کے دونوں ہواباز طیارے سے نکلنے میں کامیاب ہو گئے اور اب ان کا ہسپتال میں علاج کیا جا رہا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق اسرائیلی وزارت دفاع کے ایک ترجمان نے اس کا ایف 16 طیارہ شام کے اندر اس ایرانی ہدف کو نشانہ بنا رہا تھا جہاں سے اسرائیلی سرزمین کے اندر ایک ڈرون چھوڑا گیا تھا۔ شمالی اسرائیل کے شہروں میں خطرے کے سائرن بجائے گئے ہیں۔ سرحدی علاقے کے اسرائیلی شہریوں نے کئی دھماکوں کی آوازیں سننے کی اطلاعات دی ہیں۔ اسرائیلی فوج نے ایک بیان میں کہا کہ ایک جنگی ہیلی کاپٹر نے ایک ایرانی ڈرون کو نشانہ بنایا جسے شام سے چھوڑا گیا تھا اور وہ اسرائیلی حدود میں داخل ہو گیا تھا۔ بیان میں مزید کہا گیا اس ڈرون کو جلد ہی شناخت کر لیا گیا اور اس کے جواب میں اسرائیلی ڈیفنس فورسز نے شام کے اندر ایرانی اہداف کو نشانہ بنایا۔ دوسری جانب فرانس نے روس پر زور دیا ہے کہ وہ شام میں باغیوں کے زیر قبضہ 2 علاقوں پر سرکاری فورسز کے حملوں کے نتیجے میں بگڑتی صورتحال کو بہتر بنانے کے لیے اقدامات کرے۔جرمن خبررساں ادارے کے مطابق شامی فورسز نے ان دونوں علاقوں کا محاصرہ کر رکھا ہے اور وہاں 6 دنوں سے شدید بمباری جاری ہے۔ مشرقی علاقے غوطہ اور ترک سرحد سے متصل ادلب کے ایک علاقے میں شہریوں کی ایک بڑی تعداد بھی محصور ہے۔ مشرقی غوطہ میں شامی فورسز کی کارروائیوں کی وجہ سے گزشتہ چار دنوں کے دوران دو سو تیس افراد مارے جا چکے ہیں۔ فرانسیسی صدر میکروں نے اپنے روسی ہم منصب پیوٹن سے ٹیلی فون پر گفتگو میں اس صورتحال پر تحفظات کا اظہار کیا ہے۔
شام / طیارہ