برداشت کلچر کے فروغ سے ہی امن معاشرے کی تشکیل کرسکتے ہیں، احسان غنی

11 فروری 2018

کراچی (نیوز رپورٹر) نیشنل کائونٹر ٹیرارزم اتھارٹی (نیکٹا) کے نیشنل کوآرڈینیٹر سربراہ احسان غنی نے جامعہ کراچی میں منعقدہ لیکچر بعنوان’’امن اور برداشت‘‘ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ برداشت ایک معاشرے کو بہتر بناتی ہے اور اب ہم دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑنے میں کامیاب ہوچکے ہیں بس کچھ چیزیں باقی ہیں جس کو ختم کرنے کے لئے ہمیں کام کرنا پڑے گا۔میں یونیورسٹی کے طلباوطالبات کے پاس اس لئے آیاہوں کہ وہ اپنا کردار اداکریں اور اب جو دہشت گردی کی کچھ جڑیں ملک میں باقی ہیں اس کو ختم کرنے کے لئے جامعات کے طلباوطالبات کو آگے آناہوگا۔انہوں نے عدم برداشت اور برداشت پر تفصیلی روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ کس طرح سے عدم برداشت معاشروں میں بگاڑ پیداکرتی ہے اور برداشت کے کلچر کو فروغ دے کر ہی ہم ایک پر امن معاشرے کی تشکیل کرسکتے ہیں۔ایک سوال کے جواب میںانہوں نے میڈیا کے کردار پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ میڈیا کا ایک کلیدی کردار ہوتاہے ،میڈیا کو سنسنی پھیلانے کے بجائے اپنی رپورٹنگ پر توجہ دینے کی ضرورت ہے۔میڈیا کو اپنی ذمہ داریوں کا احساس ہونا چاہیئے،اگر میڈیا دہشت پھیلانے میں معاونت کریں توان کا بھی احتساب ہونا چاہیئے۔میں ملک کی 35 نامور جامعات میں جانے کا ارادہ رکھتاہوں تاکہ طلبہ کی رائے لے کر انسداد دہشت گردی کے لئے اقدامات اور پالیسی وضع کی جائے۔