بھارت مقبوضہ کشمیر میں ہندو اکثریت کیلئے آبادی میں تبدیلیاں کررہا ہے:وزارت خارجہ

11 اپریل 2018 (16:18)

اسلام آباد: وزارت خارجہ نے قومی اسمبلی کو بتایا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں ہندو اکثریت کے لیے آبادی میں تبدیلیاں کررہا ہے۔قومی اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران وزارت خارجہ کی جانب سے تحریری جواب پیش کیا گیا جس میں مقبوضہ کشمیر سے متعلق بتایا گیا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں ہندو اکثریت کے لیے آبادی میں تبدیلیاں کررہا ہے. اس مسئلے پر اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل اور سلامتی کونسل کو خطوط لکھے ہیں جب کہ وزارت خارجہ اس ضمن میں بیانات بھی جاری کرچکی ہے۔تحریری جواب میں بتایا گیا ہے کہ حالیہ سالوں میں بیرون ملک جانے والے پاکستانیوں کی تعداد میں اضافہ ہوا، بیرون ممالک جانے کی وجہ وہاں کا معیار تعلیم ہے. یورپی اور امریکی ممالک میں روزگار کے لیے بھی پاکستانی جارہے ہیں۔وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ ہمارے شہری غیر ملکیوں سے شادی بھی کرلیتے ہیں اور پاکستانی باہر کے ممالک میں غیر ملکی شریک حیات کے ساتھ رہنے کو ترجیح دیتے ہیں جب کہ پاکستانی اپنے آپ کو بیرون ملک پاکستانی مشنز میں رجسٹرڈ نہیں کرواتے۔وزارت خارجہ نے بتایا ہے کہ چین میں اس وقت 484پاکستانی قید ہیں، پاکستانی قیدیوں میں 122بیجنگ سفارتخانے کی حدود میں ہیں. شنگھائی قونصلیٹ کی حدود میں 13، گوانگزو کی حدود میں 94پاکستانی قید ہیں، چنگدو قونصلیٹ کی حدود میں 13، ہانگ کانگ میں 242 پاکستانی قید ہیں، قیدیوں سے متعلق پاکستانی سفارتی مشنز چینی حکام سے رابطے میں ہیں۔