سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں مہنگائی کے تناسب سے اضافہ کیا جائے

11 اپریل 2018

ملتان (سماجی رپورٹر) تمام سرکاری ملازمین کو ایک جیسے پے سکیل اور الائونسز دئیے جائیں ۔ ایڈہاک ریلیف بنیادی تنخواہ میں شامل کرکے پے سکیل ریوائز کئے جائیں ۔ مہنگائی کے تناسب سے تنخواہوں میں اضافہ کیا جائے ۔ ہائوس رینٹ نئے پے سکیل پر 60 فیصد سب کو دیا جائے ۔ ان خیالات کا اظہار آل پاکستان کلرکس ایسوسی ایشن ملتان کے عہدیداران چیئر مین خالد حسین قصوری ، ریحان فاروق جٹ ، اور نیاز ڈھلوں نے نوائے وقت موبائل فورم میں کیا ۔ انہوں نے کہا کہ یوٹیلٹی الائونس گروپ انشورس ہائوس رینٹ دیا جائے ۔ تمام کنٹریکٹ ملازمین کو تقرری کی تاریخ سے ریگولر کیا جائے ۔ ضم کی گئیں آسامیاں بحال کی جائیں ۔ ایکسائز انسپکٹر ، کانسٹیبل ، دوران ڈیوٹی یونیفارم گاڑی سے محروم ہوتے ہیں اور اسلحہ وغیرہ بھی نہیں ہوتا جس کے باعث کارروائی نہ صرف جان جوکھوں کا کام ہوتا ہے بلکہ زندگی کو بھی خطرات لاحق ہوتے ہیں جس کیلئے ضروری ہے کہ یونیفارم ، گاڑی اور اسلحہ مہیا کیا جائے ۔ طاہر عباس ، مرزا زاوار ، افتخار بھٹی نے کہا کہ ریٹائرمنٹ کے بعد بقایا جات بروقت ادا نہیں کئے جاتے بلکہ ادائیگی کے دوران …… سے کام لیا جاتا ہے اور 2، 2 سال کا عرصہ بیت جاتا ہے ۔ ریٹائرمنٹ کے فوراً بعد بقایا جات کی ادائیگی کی جائے ۔ ملازمین کیلئے رہائش بھی ایک مسئلہ ہے ۔ جب کہیں تبادلہ ہوتا ہے رہائش ان کیلئے بہت مسئلہ ہوتا ہے ۔ رہائش پر تنخواہ کا بھاری حصہ خرچ ہوتا ہے ۔ کالونیاں مہیا کی جائیں ۔ عدنان غفوری ، احمد رضا اور ملک فیاض نے کہا کہ حکومت اللوں تللوں پر کروڑوں خرچ کر رہی ہے مگر ملازمین کا کوئی پرسان حال نہیں ۔ ہر منگل کو دفتر کے باہر احتجاج ہورہا ہے مگر حکومت ٹس سے مس نہیں ہورہی ۔ جب تک مطالبات تسلیم نہیں کئے جائیں گے اس وقت تک احتجاج جاری رہے گا ۔

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...