امریکی فوجی اتاشی کے کیس میں دہشتگردی ایکٹ کی دفعہ سات لگتی ہے، حشمت حبیب

11 اپریل 2018

اسلام آباد(خصوصی نمائندہ)تحریک تحفظ عدلیہ کے صدر حشمت حبیب ایڈووکیٹ سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ امریکی فوجی اتاشی کی گاڑی کے ٹکر میں جاںبحق ہونے والے عتیق کے کیس میں انسداد دہشت گردی ایکٹ کی دفعہ سات لگتی ہے ۔ اپنے ایک بیان میں ان کا کہنا تھاکہ ٹریفک قانون کی خلاف ورزی اور سرخ لائٹ کو توڑنے کے بعد ہونے والے حادثہ میں ایک نوجوان شہید اور دوسرا شدید زخمی ہو گیا ہے اس واقعہ کے بعد اب امریکی اتاشی کا سفارتی استحقاق ختم ہوگیا ہے۔ جنرل مشرف کے خلاف کیس میں اسلام آباد ہائیکورٹ کے حکم پر انسداد دہشت گردی کی دفعہ سات لگائی گئی تھی اور چالان انسداد دہشت گردی کی عدالت میںپیش کیا گیا ۔اسی طرح ماضی میں ریمنڈڈیوس کے کیس میں بھی اے ٹی اے کی دفعہ سات لگانے کا مطالبہ کیا گیا تھا اورپنجاب حکومت اس وقت یہ دفعہ لگانے میں ناکام ہو گئی تھی جس کی وجہ سے ریمنڈڈیوس فرار ہوگیا تھا ۔ حشمت حبیب نے کہا کہ پاکستان کی حکومت کے پاس انتہائی سنہری موقع ہے کہ وہ ڈاکٹر عافیہ کو واپس لے آ سکتی ہے اگر وہ فوری طور پر امریکی اتاشی کے خلاف چالان پیش کردے اور اس میں پی پی سی کی دفعہ تین سو دو اور اے ٹی اے کی دفعہ سات لگائی جائے اور انسداددہشت گردی کی عدالت میں اسے پیش کر دیا جائے اور مجرم قرار دیا جائے جس کے نتیجہ میں امریکی حکومت ڈاکٹر عافیہ کو اپنے اتاشی کے بدلے میں رہا کر دے گی۔

نفس کا امتحان

جنسی طور پر ہراساں کرنے کے خلاف خواتین کی مہم ’می ٹو‘ کا آغاز اکتوبر دو ...