ذہنی مرض میں مبتلا بھارتی شہری کی حیران کن صلاحیتوں پر ڈاکٹر حیران

11 اپریل 2018

نئی دہلی (این این آئی)شوریا نامی اس نوجوان کو ڈاؤن سینڈروم کا مرض لاحق ہے۔ دماغی ڈس آرڈر کے علی الرغم اپنی صلاحیتوں کا استعمال کرکے ڈاکٹروں کو بھی ورطہ حیرت میں ڈال دیا ہے۔ وہ برتن سازی کے فن میں ماہر ہے۔ اس نے اپنا ایک پرائیویٹ سٹوڈیو بھی بنا رکھا ہے اور وہ بہت سے اپنے کام خود کرتا اور گاڑی بھی چلاتا ہے، حالانکہ ایسے تمام کام ڈاؤن سینڈروم کے مریضوں کلئے محال سمجھے جاتے ہیں۔

انسانی دماغ کے بند راستوں کو کھولنے اور بعض مخصوص ذہنی کیفیات کی جانچ کے لیے ماہرین روایتی اور جدید سائنسی طریقے اپناتے ہیں مگر بعض اوقات بڑے بڑے دماغی ماہرین بھی ذہنی عوارض کے شکار افراد کی صلاحیتوں اور ان کی کارکردگی پر حیران رہ جاتے ہیں۔ جیسا کہ بھارت کے ایک شہری کے واقعے سے پتا چلتا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق شوریا نامی اس نوجوان کو ڈاؤن سینڈروم کا مرض لاحق ہے۔ ڈاکٹروں کے خیال میں اس مرض کے شکار مریض کسی قسم کی تخلیقی صلاحیت نہیں رکھتے اور کوئی کام بھی ڈھنگ سے نہیں کرپاتے مگر شوریا دماغی ڈس آرڈر کے علی الرغم اپنی صلاحیتوں کا استعمال کرکے نہ صرف عام لوگوں بلکہ ڈاکٹروں کو بھی ورطہ حیرت میں ڈال دیا ہے۔شوریا نے خود کو ایک عبقری ثابت کیا ہے۔ وہ برتن سازی کے فن میں ماہر ہے۔ اس نے اپنا ایک پرائیویٹ سٹوڈیو بھی بنا رکھا ہے اور وہ بہت سے اپنے کام خود کرتا اور گاڑی بھی چلاتا ہے، حالانکہ ایسے تمام کام ڈاؤنڈ سینڈروم کے مریضوں کے لیے محال سمجھے جاتے ہیں۔