ایوان فیلڈریفرنس: واجد ضیاءپر نوازشریف کے وکیل کی مسلسل نویں روز جرح‘ نیب پراسیکیوٹر کا اعتراض

11 اپریل 2018

اسلام آباد(صباح نیوز)شریف خاندان کے خلاف ایون فیلڈ ریفرنس میں نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث نے منگل کو مسلسل نویں روز جے آئی ٹی کے سربراہ واجد ضیا پر جرح کی جس پر پراسیکیوٹر نیب نے اعتراض اٹھایا ہے۔ اسلام آباد کی احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے نیب کی جانب سے دائر کردہ ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت کی ۔ریفرنس میں نامزد ملزمان سابق وزیراعظم نواز شریف، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد کیپٹن(ر)محمد صفدر احتساب عدالت میں پیش ہوئے ۔نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث نے جرح کا آغاز کیپٹل ایف زیڈ ای سے کیا تو نیب پراسیکیوٹر سردار مظفر عباسی نے اعتراض اٹھاتے ہوئے کہا کہ تین دن سے جس نقطے پر بحث ہو رہی ہے وہ غیرمتعلقہ ہے۔خواجہ حارث نے کہا کہ کیپٹل ایف زیڈ ای لندن فلیٹس سے متعلق معاملہ ہے، جب شواہد پیش کئے تو اس وقت انہیں خیال کیوں نہیں آیا۔نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ تین دن سے پہلے سے تسلیم شدہ حقائق پر جرح ہورہی ہے، اقامہ تسلیم شدہ ہے، تنخواہ تسلیم شدہ ہے لیکن کہتے ہیں وصول نہیں کی، نواز شریف نے کبھی کیپٹل ایف زیڈ ای کی چئیرمین شپ سے انکار نہیں کیا۔خواجہ حارث نے کہا کہ بحث کر لیتے ہیں یہ نہ ختم ہونے والی کہانی ہے، یہ میرا اپنا کیس ہے دفاع میں سب کچھ پوچھنے کا حق ہے۔اس موقع پر فاضل جج محمد بشیر نے خواجہ حارث کو کہا کہ آپ جرح کریں لیکن مختصر کریں۔