صنعتی اداروں کے مزدوروں کے جائز مطالبات منظور کئے جائیں

11 اپریل 2018

راولپنڈی(نیوز رپورٹر) راولپنڈی اٹک ریفائنری مورگاہ کی مزدور یونین (سی بی اے)کے مرکزی آفس میں6صنعتی اداروں کی مزدوریونینزکے مرکزی عہدیداروں ، صدور ، جنرل سیکر ٹریزکا ایک نکا تی ایجنڈاپر ہنگا می اجلاس اٹک ریفائنری مذدور یونین سی بی اے کے صدر حمید خان کی دعوت پر منعقد ہو ا ،اجلا س کا آغا ز تلا وت کلا م پا ک سے ہو اجس کی سعادت یونین کے جنرل سیکرٹری عبدالرئوف نے حا صل کی ،آنے والے تمام یونین سی بی اے کے عہدیداروں کو عبدالرئوف نے خو ش آمدید کہا اور اجلا س شروع ہو ا جس میں ، غریب وال سیمنٹ فیکٹری ، آئی سی آئی ایمپلا ئز سوڈا ایش کھیو ڑہ ، کو ہ نورملز ، ڈینڈوت سیمنٹ فیکٹری ، ایچ ایم سی ایمپلا ئز یونین ٹیکسلا ، کے صدور جنرل سیکٹریز ودیگر عہدیداروں نے شرکت کی جس میں، حا جی عبدالغفور ، شیر از گل ، ملک اجمل ، سجاد حسین گردیزی ، وقار احمد ، چوہدری عبدالر حمان، چوہدری ریا ض ، ملک جاوید اقبال ، محمد اشرف ، عبدالرئوف ، حمید خان جدون و دیگر شامل تھے ،اجلا س کے بعد مشترکہ بیان میںکہا کہ وفاقی حکومت پنجاب بھر کے صنعتی اداروں میںکام کرنے والے مزدوروں، محنت کشوں کے ور کر ویلفئیر فنڈ کی مد میں11ہزار 250سے زائد منظور کیس تقریباًًایک ارب 50کروڑسے زائد کی رقم کئی سالو ں سے نہ ملنے کے باعث صنعتی داروںکے مزدور شدید مشکلا ت کا شکار ہیںکو ئی پر سان حا ل نہیںہے سکالر شپ ،2831کیس ، مئی 2017تک، ڈیتھ گرانٹ 1316کیس،مئی 2017تک ،میرج گرانٹ کیس 7104اگست 2016تک منظو ر ہو ئے جبکہ سال 2018کا کوئی کیس اس میںشامل نہیںہے ،صنعتی اداروں میں کام کے دواران وفات پانے والے 1316مزدوروںکی بیوائوں کو ڈیتھ گرانٹ کی صورت میںملنے والی رقم 3سال سے نہ مل سکی جس کی وجہ سے وفات پانے والے مزدوروں کے اہل خا نہ میںبھی سخت مایوسی پائی جاتی ہے ، یہ رقم حکومت کی نہیںبلکہ صنعتی اداروں کی ہے جو کہ وفاقی حکومت کے اکا ئونٹ میںپڑی ہے ، جو کہ پچھلے کئی سالو ں سے التوا کا شکار ہے ، اس بات کا خد شہ ظا ہر کیا جا رہا ہے ، کہ ہمارے مزدو ر بھا ئیوں کے خو ن پسینے کی کمائی کسی اور جگہ نہ لگا دی ہو ، زیر تعلیم کالجو ں، یونیورسٹیو ں میںمزدوروں کے بچوں کو فیس کی عدم ادائیگی کی وجہ سے نکالا جا رہا ہے ، جس سے ان کا مستقبل تباہ ہو نے کا خد شہ ہے ، جبکہ میرج گرانٹ بھی نہ ملنے کی وجہ سے مزدور محنت کش اپنی بچیوں کی شادیا ں کرنے سے محروم ہیں، پاکستان بھر میں مزدور بری طر ح پس رہا ہے ہماری ، وزیر اعظم پاکستان ، مشیر خزانہ سے اپیل ہے کہ ورکر ویلفئیر فنڈ کی ڈیڑھ ارب کی رقم جاری کی جائے ، ہماراایک ہی مطا لبہ ہے ، اگر چند روز تک حکومت کی طرف سے کو ئی جواب نہ ملا تو پنجاب بھر کے صنعتی اداروںکے ، مزدور اپنا حق لینے کے لیے بھر احتجا ج کر یںگے اس کے علاوہ بہت ساری آپشن زیر غور ہیں ۔