پاکستان کا انکار، بھارت ایشیا کپ کی میزبانی سے محرو م

11 اپریل 2018

کوالا لمپور(سپورٹس ڈیسک ) پاکستان کرکٹ بورڈ ( پی سی بی) کے تحفظات کے پیش نظر ایشیاء کرکٹ کپ کو بھارت سے متحدہ عرب امارات ( یو اے ای) منتقل کردیا گیا۔ ملائیشیا کے دارالحکومت کوالالمپور میں ایشین کرکٹ کونسل کے اجلاس میں اہم فیصلے کیے گئے، اجلاس میں پاکستان کی نمائندگی چیئرمین پی سی بی نجم سیٹھی اور چیفآپریٹنگ افسر سبحان احمد نے کی۔ ایشیا کپ اس سال ستمبر میں بھارت میں شیڈول تھا تاہم پاکستانی ٹیم کی شرکت پر سوالیہ نشان تھا۔پاکستان کرکٹ بورڈ کا موقف تھا کہ جب بھارت پاکستان کا دورہ نہیں کرتا تو گرین شرٹس بھی بھارت نہیں جا سکتی۔کونسل نے پاکستان کے موقف کو تسلیم کرتے ہوئے ایشیا کپ ٹورنامنٹ کی میزبانی متحدہ عرب امارات کو دے دی اور اب یہ کپ 13 سے 28 ستمبر تک متحدہ عرب امارات منعقد ہوگا۔ایشیاء کپ میں 6 ممالک کی ٹیمیں حصہ لیں گی جن میں پاکستان، بھارت، سری لنکا، بنگلہ دیش اور افغانستان کی ٹیمیں شامل ہیں جبکہ ہانک کانگ، ملائیشیا،نیپال،عمان، سنگاپور اور یو اے ای کی ٹیموں میں سے ایک ٹیم کوالیفائر راؤنڈ کھیل کر ٹورنامنٹ کا حصہ بنے گی۔اس کے ساتھ ساتھ رواں ماہ پاکستان میں شیڈول ایشیاء ایمرجنگ کپ کو بھارت کے اعتراض پر 2 ممالک میں کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا۔خیال رہے کہ بھارت کی جانب سے بھی پاکستان میں میچز کھیلنے پر اعتراض کیا گیا تھا، جس کے بعد یہ فیصلہ کیا گیا اور اب بھارتی ٹیم اس کپ میں اپنے میچز سری لنکا میں کھیلے گی۔ایشیا ایمرجنگ کپ کو اپریل کے بجائے اب دسمبر میں مشترکہ طور پر پاکستان اور سری لنکا میں منعقد کیا جائے گا, اس کے ساتھ ساتھ رواں سال پاکستان ایشین کرکٹ کونسل کے اجلاس کی میزبانی بھی کرے گا۔