پاک فوج نے10 سال بعد اپر اور لرء دیر میں سکیورٹی اختیارات سول انتظامیہ کے سپرد کر دئیے

11 اپریل 2018

دیر لوئر/سوات ( اپنے نمائندوں سے)دہشت گردی کے خاتمہ اور قیام امن کے بعد پا ک فوج نے دس سال بعد لوئر دیر اور اپر دیرمیںچیک پوسٹوں کو پولیس کے حوالے کرنے کا اعلان کرتے ہوئے سکیورٹی اختیارات سول انتظامیہ کو سونپ دیئے،اس حوالے سے دیر سکاوٹس چھاونی بلامبٹ میں ایک پر وقار تقریب منعقد ہوئی جس میں جنرل آفیسرکمانڈنگ میجر جنرل علی عامر اعوان ، کمانڈنٹ دیر ٹاسک فورس کرنل شہزاد امیر، کمشنر ملاکنڈ سید ظہیر الاسلام شاہ، صوبائی وزیر خزانہ مظفر سیدایڈوکیٹ، ڈی آئی جی ملاکنڈ اختر حیات گنڈا پور،ضلع دیر لویر اور اپر کے ڈپٹی کمشنرز، ڈی پی اوز،ارکان قومی اسمبلی صاحبزادہ محمد یعقوب خان ، صاحبزادہ طارق اللہ ، عمائدین علاقہ ، فوجی اور سول حکام، ناظمین نے کثیر تعداد میں شرکت کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے جنرل آفیسر کمانڈنگ میجر جنرل علی عامر اعوان ، کما نڈنٹ دیر ٹاسک فورس کرنل شہزارد امیر، کمشنر ملاکنڈ ظہیرا لسلام نے کہا کہ آج کا دن پاکستان کی تاریخ میں انتہائی اہمیت کا حامل ہے کہ فوجی حکام سکیورٹی اختیارات سول انتظامیہ کو حوالہ کر رہے ہیں آج سے دس سال قبل 2008میں ملاکنڈ ڈویژن میں دہشت گردوں نے حکومتی رٹ چیلنج کرتے ہوئے اسلام اور شریعت کے نام پر ظلم اور بربریت کا بازار گرم کرکے ہسپتالوں ، تعلیمی اداروں، مارکیٹوں اور بازاروں کو بم دھماکوں سے تباہ کرنا شروع کیا تھا ، لوگوں کو اغواء کرکے قتل کیا جارہا تھااور دہشت گردوں نے اپنی حکومت قائم کی تھی جس کی سرکوبی اور حکومتی رٹ بحال کرنے کے لئے فوج، پولیس، لیویزنے آپریشن شروع کیا تھا جس کے دوران سیکور ٹی فورسز کے470 اہلکار شہید ہوگئے جبکہ ساڑھے تین ہزار دہشت گرد مارے گئے پاک فوج نے عوام کے تعاون سے نہ صرف ملاکنڈ ڈویژن میں مثالی امن قائم کیا بلکہ دہشت گردی سے متاثرہ 300اسکولوں کو دوبارہ بحال کرا یا ،32نئے اسکولوں کو تعمیر کیاپولیس اور لیویز کو تربیت دیکر ان کی استعداد کار بڑھایا تعلیم اور خواتین کی ترقی پرفوکس کرکے خواتین کو اپنے پاوٗں پر کھڑاکرنے کے لئے انہیں کڑائی سلائی کی تربیت دی جبکہ آرمی کے اسکولوں میں بچوں کو داخل کرکے آرمی کے سکولوں میں 6 ہزار بچے پڑھا رہے ہیںانھوں نے کہ ضلع دیر کے عوام محب وطن اور پر امن لوگ ہیں اور انھوں نے پاک فوج کا بھر پور ساتھ دیکر ملاکنڈ ڈویژن میں امن قائم کرنے میں عسکری اور سول انتظامیہ کی مدد کی انھوں نے کہا کہ پولیس فورس مستعد اور بھر پور صلاحیتوں کے مالک اور وہ حالات سے نمٹنے کی بھر پور صلاحیت رکھتی ہے،میجر جنرل عامر علی اعوان نے اپنے خطاب میں کہا کہ اختیارات کی منتقلی چیف آف آرمی سٹاف کی جانب سے کئے گئے وعدے اور صوبائی ایپکس کمیٹی کی اکتوبر2017 میں ہونے والے فیصلے پر عمل درآمد کی طرف پہلا قدم ہے ، کئے گئے فیصلے کے مطابق سیکیورٹی اختیارات بتدریج ملاکنڈ ڈویژن کے دیگر اضلاع یعنی سوات ،ملاکنڈ اور دیگر میں بھی سول اداروں کو منتقل کئے جائیں گے، ناگزیر مقامات پرچیک پوسٹوں کا انتظام پولیس فورس سنبھالے گی ، انھوں نے کہ اختیارات سول انتظامیہ کو حوالے کرنے کے بعد پاک فوج سرحدات کو منتقل ہو جائیگی اور ملک کا دفاع کر ے گی اس موقع پرجی او سی نے شہداء کے یاد گار پر پھول چڑ ھائی اور پاک فوج کے دست نے یادگار شہداء پر سلامی دی ۔