ثابت ہو گیا میں صادق اور امین ہوں‘ خواجہ آصف سکیورٹی رسک‘ نوازشریف نے کشمیریوں کی تحریک کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا: عمران

11 اپریل 2018

اسلام آباد (نامہ نگار+ آن لائن+ نوائے وقت رپورٹ) عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان میں کوئی عسکری یا سویلین رہنما امن اور بھارت سے بہتر تعلقات کا مخالف نہیں، بندوق کی نوک پر امن اور خوشگوار تعلقات ممکن نہیں، مودی سرکار بزور قوت اہل کشمیر کے حقوق غصب کرتی اور کشمیر میں انسانی حقوق پامال کرتی ہے، پائیدار امن تنازعات کے حل سے وابستہ ہے۔ پہلے دن سے کہہ رہا ہوں خواجہ آصف ملک کیلئے سکیورٹی رسک ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سرینگر کے جریدے کشمیر گریٹر کو انٹرویو اور پارٹی رہنما عثمان ڈار سے بنی گالا میں ملاقات کے دوران کیا۔ عمران خان نے کہا تنازعہ کشمیر مرکزی حیثیت کا حامل ہے جس کا حل ناگزیر ہے، مشرقی تیمور کی طرح تنازعہ کشمیر کا حل بھی سلامتی کونسل کی قراردادوں میں پوشیدہ ہے، ہم مکمل طور پر سلامتی کونسل کی قراردادوں کی روشنی میں اہل کشمیر کے حق خودارادیت کیساتھ کھڑے ہیں۔ مسئلہ کشمیر پاک بھارت تعلقات کی نوعیت کا تعین کرتا ہے، نواز شریف نے اہل کشمیر کی حق خودارادیت کی تحریک کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا، نواز شریف نے مودی کی تقریب حلف برداری میں شرکت کے موقع پر حریت قیادت سے ملاقات تک نہ کی، نواز شریف نے حریت قیادت سے ملاقات کرکے اہل کشمیر کی آواز بننے کی بجائے اپنے کاروبار کو فوقیت دی،نواز شریف نے اپنے کاروباری مفادات کو مسئلہ کشمیر اور قومی مفاد دونوں پر ترجیح دی۔ کشمیر کمیٹی ہر لحاظ سے ناکامی کا استعارہ ہے،حکومت کے ہاں کشمیر پر کوئی واضح حکمت عملی موجود نہیں،کشمیر کمیٹی والے مولانا نے مراعات سمیٹنے اور سرکاری خرچ پر دنیا گھومنے کیلئے کمیٹی کی سربراہی قابو کررکھی ہے، مولانا کی ساکھ ایسی ہے کہ یورپ کے کئی ممالک انہیں ویزا تک نہیں دیتے، قومی اسمبلی کے سپیکر کشمیر کمیٹی پر اٹھنے والے اخراجات قوم کے سامنے رکھنے کو تیار نہیں، تحریک انصاف کشمیر کے حوالے سے مکمل سوچ رکھتی ہے۔ اقتدار میں آئے تو کشمیر پر جامع، متحرک اور مؤثر پالیسی بنائیں گے۔ اہل کشمیر کے حق کیلئے اور بھارتی جبر و تسلط کیخلاف آواز اٹھاتے رہیں گے۔ عثمان ڈار سے ملاقات میں عمران خان نے کہا ہے کہ غیر ملکی کمپنی کے ملازموں کی فہرست میں وزیر خارجہ کا نام شرمناک ہے‘ غیر ملکی کمپنی سے ملازمت کا معاہدہ بے شرمی ہے۔ دنیا کا کوئی بھی وزیر خارجہ غیر ملکی کمپنی میں ملازمت نہیں کرتا۔ انسداد دہشت گردی عدالت میں پیشی کے موقع پر عمران نے کہاکہ ن لیگ اقتدار میں ہو تو لوگ ان کے ساتھ آ جاتے ہیں، ورنہ ساتھ چھوڑ جاتے ہیں۔ انسداد دہشت گردی کا قانون خاص مقصد کے لئے بنایا گیا تھا، شکر ہے خاقان عباسی کو یہ قانون یاد آگیا، مگر اس کا غلط استعمال کیا جارہا ہے۔ سیاسی جدوجہد کرنے والے اور نوازشریف پر جوتا پھینکنے والے دونوں پر دہشت گری کی دفعات لگا دی گئیں، مظاہرہ کرنے پر دہشت گردی کا مقدمہ کرنے کا مطلب احتجاج کا حق لینا ہے۔ شریف خاندان کے خلاف احتساب عدالت کی کارروائی ضرور براہ راست دکھائی جانی چاہئے۔ اپنے سوچ سے وہ ٹھیک کہہ رہے ہیں کہ مجھے سیاست نہیں کرنی چاہیے تھے ،میں سیاست نہ کرتاتو ان کے بچوں کے بچوں کی قوم غلامی کر رہی ہوتی۔ ثابت ہو گیا میں صادق اور امین ہوں دہشت گردی نہیں۔ نوازشریف اور شہباز شریف نے قوم کو پاگل بنایا ہوا ہے، بڑا بھائی کہتاہیسازشیں ہورہی ہیں چھوٹے بھائی کولگتاہے جنرل باجوہ سے نیا عشق ہوگیا،کوئی پاگل نہیں بنے گا، قوم اس ڈرامے کو سمجھ گئی ہے۔ زرداری سے اتحاد مقصد ہوتا تو نوازشریف سے الائنس کر لیتے، شکر ہے آج نوازشریف اور شاہد خاقان کو بھی آزادانہ انتخابات کی یاد آ گئی ہے۔ جنوبی پنجاب کے صوبے کا مطالبہ اس لئے ہوا کہ پنجاب کے 57 فیصد بجٹ صرف لاہور پر خرچ ہوگیا، جنوبی پنجاب میں احساس محرومی ہے، وہاں کے لوگ ٹھیک کہہ رہے ہیں، ہم جنوبی پنجاب کے عوام کے مطالبات کی حمایت کرتے ہیں۔ منی لانڈرنگ نے آج پاکستان کے بچے بچے کو مقروض کردیا ہے،نوازشریف بتائیں کہ بچوں کے نام پر اربوں روپے کیسے کمائے اور وہ ملک سے باہر کیسے گیا؟ عدالت نے ایس ایس پی عصمت اللہ جونیجو تشدد کیس میں فیصلہ محفوظ کرلیا۔ بریت کی درخواست پر فیصلہ 25اپریل کو سنایا جائے گا۔ بابر اعوان نے کہا کہ میرے موکل کا نام خان ہے اور وہ دہشت گرد نہیں۔