عالمی ماہرین زراعت نے اجناس کی حفاظت کیلئے جدید مشینیں متعارف کرادیں

11 اپریل 2018

کراچی( کامرس رپورٹر) بارہویں تین روزہ ایگری، رائس اور فوڈ ٹیکنالوجی نمائش کا آغاز ہوگیا۔ نمائش کے افتتاح کے موقع پرڈپٹی میئر کراچی ڈاکٹر ارشد وہرہ نے کہا ہے نمائشوں کے انعقاد سے شہر میں گہماگہمی ہورہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان زرعی ملک ہیں ٹیکنالوجی نہ ہونے کے باعث ایک ارب ڈالر کی اجناس، پھل و سبزیاں ضائع ہورہی ہیں، جب تک جدید ٹیکنالوجی اپنائی نہیں جائے گی ہم اہداف حاصل نہیں کرسکیں گے۔ ڈاکٹر ارشد وہرہ نے کہا کہ صنعتی انقلاب کے لیئے چیمبرز، فیڈریشن، وازرتوں اور تمام اسٹیک ہولڈرز کو مشترکہ جدوجہد کرنا ہوگی۔ ارشد وہرہ نے کہا کہ ہم نے ستر سال میں نصف سفر بھی طے نہیں کیا، ہماری ٹیکسٹائل برآمدات کا گراف نیچے جارہا ہے، انہوں نے کہا کہ بیس سال قبل گارمنٹ سٹی منصوبے کا اعلان کیا گیا تھا جس کا اب کوئی اتا پتا نہیں یہ منصوبہ صرف کاغذات کی حد تک رہ گیا، اگر اس پر سنجیدگی کے ساتھ عمل درآمد کیا جاتا تو پانچ لاکھ سے زائد روزگار فرہم کرنے کاذریعہ بن جاتا اور اس منصوبے سے اربوں ڈالر کا ریوینیو بھی حاصل ہوتا۔ ڈپٹی میئر ڈاکٹر ارشد وہرہ نے کہا کہ پاکستانی محنت کش کی ہنرمندی کی استعطاعت پینتالیس فیصد جبکہ بنگلہ دیش کے ہنرمندوں کی استطاعت پینسٹھ فیصد ہے جس کے نتیجے پیں ہماری صنعتوں کی پیداواری صلاحیت کم ہورہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بارہویں ایگری، رائس اور فوڈ ٹیکنالوجی نمائش کا انعقاد خوش آئند ہے اس کے انعقاد سے جدید دنیا کی ٹیکنالوجی سے ہم آہنگ ہونے کے بہترین مواقع میسر آسکتے ہیں۔ ڈاکٹر ارشد وہرہ نے کہا کہ پاکستان کے معاشی حب کو پروان چڑھانے کے لیئے مشترکہ کاوشوں کی ضرورت ہے۔ ارشد وہرہ نے کہا کہ ہماری بدقسمتی یہ ہے کہ خود ووٹ دے کر چوروں اور ڈاکوؤں کا انتخاب کیا۔ بارہویں ایگری، رائس اور فوڈ ٹیکنالوجی کی تین روزی نمائش کے افتتاح کے موقع پر ڈپٹی میئر کراچی نے ہالز کا دورہ کرتے ہوئے مختلف اسٹالز پر مصنوعات کا معائنہ کیا۔ ای کامرس گیٹ وے کے تحت بارہویں تین روزہ ایگرئ، رائس اور فوڈ ٹیکنالوجی نمائش میں ایک سو پچاس سے زائد ایگزیبیٹرز مقامی اور بین القوامی مصنوعات پیش کررہے ہیں۔ بارہویں ایگری، رائس اور فوڈ ٹیکنالوجی نمائش میں اس سال ایک سو سے زائد غیر ملکی وفود شرکت کررہے ہیں۔ ای کارمس گیٹ وے کے تحت اس نمائش میں بیس ممالک جن میں چین، ترکی، سری لنکا، سوئزرلینڈ، متحدہ عرب امارات، برطانیہ، سنگاپور، ملیشیائ، بیلجیئم اور کوریا کی مصنوعات اور ٹیکنالوجی اسٹال سجائے گئے ہیں۔ دس اپریل سے بارہ اپریل تک جاری رہے والی نمائش میں اس سال پچاس ہزار سے زائد افراد کی شرکت متوقع ہے۔ ای کامرس گیٹ وے کے نائب صدرعمیر نظام نے کہا ہے کہ اس سال کراچی، اسلام آباد اور لاہور میں بھی بین القوامی نمائشوں کا انعقاد کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بین القوامی نمائشوں کے تسلسل کے ساتھ انعقاد سے پاکستان میں غیر ملکیوں کی آمد اور تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔