ایس ای سی پی نے عالمی شرعی مالیاتی معیارات جاری کر دئے

11 اپریل 2018

کراچی (کامرس رپورٹر) سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان نے بین الاقوامی ادارے اکائونٹنگ اینڈ آڈٹنگ آرگنائزیشن آف اسلامک فنانشل انسٹی ٹیوشنز کے متعین کردہ سات مزید ما لیاتی شرعی معیارات عوامی مشاورت کے لئے جاری کر دئے ہیں۔ اب تک ایس ای سی پی اسلامی مالیاتی کمپنیوں سے متعلق AAOIFIکے سات معیارات پہلے ہی نافذ کر چکا ہے۔ ایس ای سی پی کے نئے جاری کردی معیارات میں فنانشل پیپرز (شئیرز اینڈ بانڈز) سے متعلق AAOIFI اسٹینڈرڈ نمبر 21 ، انڈیکس سے متعلق شریعہا سٹینڈرڈ نمبر 27، توارق سے متعلق اسٹینڈرڈ نمبر 30، لیکویڈٹی کے استعمال سے متعلق اسٹینڈرڈ نمبر 44، انوسٹمنٹ ایجنسی کے حوالے سے اسٹینڈرڈ نمبر 46 اور زر ضمانت سے متعلق شرعی اسٹینڈرڈ نمبر 53 شامل ہیں۔پاکستان میں اسلامی مالیاتی نظام کے فروغ اور اس کے معیارات میں بہتری کے لئے ایس ای سی پی تسلسل سے اقدامات کر رہا ہے۔ اس حوالے سے ایس ای سی پی مرحلہ وار اسلامی فنانشل اداروں کے بین الاقوامی تنظیم کے منظور شدہ معیارات نافذ کر رہا ہے۔ اسلامی مالیاتی نظام کے لئے اکاؤنٹنگ اور آڈٹینگ کے لئے AAOIFIکے مالیاتی معیارات دنیا میں بینچ مارک کی حیثیت رکھتے ہیں۔ اسلامی مالیاتی نظام کے بین الاقوامی معیارات کو مقامی اسلامی مالیاتی خدمات فراہم کرنے والے اداروں میں کامیابی کے ساتھ متعارف کروانے کے لئے ایس ای سی پی عالمی معیارات مقرر کرنے والے بین الاقوامی اداروں اور مقامی کمپنیوں کے ساتھ مشاورت کا عمل مسلسل جاری رکھے ہوئے ہے۔ ملک میں اسلامی مالیاتی نظام کی اہمیت اور بڑھوتی کو دیکھتے ہوئے ایس ای سی پی نے اکائوئنٹنگ اور آڈیٹنگ کے عالمی معیارات کے نفاذ کا عمل تیز کر دیا ہے۔ ایس ای سی پی کے شریعہ ایڈوائزی بورڈ نے گزشتہ ہفتے ہونے والے اجلاس میں مزید شرعی معیارات کو نافذ کرنے کی منظوری دی تھی۔ دلچسپی رکھنے والے افراد ان معیارات کے جاری ہونے کے بعد14 دن کے اندر اندر اپنی آرا ء اور تجاویز سے کمیشن کو آگاہ کر سکتے ہیں۔رواں سال فروری میں ایس ای سی پی نے اسلامی مالیاتی کمپنیوں کے لئے صکوک سرمایہ کاری ، تحویل ( قبض) اور بلا معاوضہ خدمات فراہم کرنے والے ایجنٹوں کے کردار ( الفضولی) کے لئے تجویز کردہ شرعی معیارات نمبر 17، 18 اور 23 کے نافذ العمل ہونے کا نوٹیفیکیشن جاری کیا تھا۔ اس سے پہلے بھی ایس ای سی پی نے 2005 ، 2017، اور 2013 میں اسلامی مالیاتی اداروں کے لئے تین معیارات جاری کئے تھے جو کہ مرابحہ ، اجراء اور نفع اور نقصان کی تقسیم سے متعلق تھے۔ جبکہ جنوری 2016 میں قرض دہندہ کی جانب سے قرض کی ادائیگی میں ناکامی ، مرابحہ، اجرا ء اور مضاربہ سے متعلق چار مزید معیارات نافذ کئے تھے۔