بندوق کے زور پر نہیں، اقتدار کا حق عوام کے ووٹ پر ہے: فضل الرحمن

11 اپریل 2018

ایبٹ آباد(نامہ نگار) صدر متحدہ مجلس عمل ،چیئر مین امور کشمیر کمیٹی و امیر جمعیت علماء اسلام مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ پاکستان میں مخصوص ایجنڈے پر بعض قوتیں عمل پیرا ہیں قوم میں فرقہ واریت کو ہوا دے کر اسلام کو بدنام کیا جا رہا ہے ہمیں سب کچھ پتہ ہے کہ مختلف ادوار میں کسی طرح شب خون مارا گیا کسی نے ہوائی اڈے امریکہ کے حوالے کئے پاکستان کی فضائی حدود کی حفاظت نہیں کر سکے کہتے ہیں ہم پاکستان کے مفاد میں کام کر رہے ہیں ہم آئین و قانون کے ساتھ کھڑے ہیں شام افغانستان میں مسلمانوں کے خون سے ہولی کھیلنے والے ہمیں انسانیت کا درس دے رہے ہیں امن کیلئے علماء کی حمایت حاصل نہ ہوتی تو صرف فوج امن حاصل نہیں کر سکتی تھی ختم نبوت ناموس رسالت اسلامی نظریاتی کونسل کی ترمیم تک ہمیشہ ہم آہنگی کا درس دیا ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایبٹ آباد میں مولانا شفیق الرحمن مرحوم کے تعزیتی ریفرنس کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ پاکستان کے اسی فیصد پاکستانی اسلامی قانون چاہتے ہیں جب تک ہم سودی نظام سے چھٹکارا حاصل نہیں کر سکتے اس وقت تک ہماری معیشت میں بہتری نہیں آ سکتی ہے انہوں نے کہا کہ نفرتوں کا درس کون دے رہا ہے پاکستانی عوام کو لسانی بنیادوں پر کون لڑا رہا ہے ہمارے معاشرے میں فرقہ واریت کو ہوا دے کر پاکستان کے امن کو سبوتاژ کیاجا رہا ہے پاکستان کے پالیسی ساز ادارے مغربی اشارے پر دین کو شک کی نظر سے دیکھ رہے ہیں مغرب دنیا میں تباہی کا ذمہ دار ہے اسلام ہمیشہ امن عدل کا درس دیتا ہے پاکستانی عوام آئندہ الیکشن میں متحدہ مجلس عمل کو مضبوط کریں ووٹ کی پرچی کو حق و باطل کیلئے استعمال کریں تمام مذہبی جماعتیں آپس میں متحد ہو کر ان طاغوتی طاقتوں کا مقابلہ کریں جو اسلام کے خلاف او رپاکستان کے خلاف سازشیں کر رہی ہیں ہمیں ان سازشوں کا مقابلہ کرنا ہے اور اسلام کی ترقی کیلئے جس طرح پہلے ہم کردار ادا کرتے رہے ہیں اب پہلے سے بڑھ کر کریں گے پاکستان کا امن اسلامی ایجنڈے سے ہی قائم ہو گا مغربی ایجنڈے پر چلنے والے پاکستان کے خیر خواہ نہیں مادر پدر آزاد معاشرہ پاکستان کے حق میں نہیں ہے چند سیاسی جماعتیں پاکستان میں آزادی کے نام پر معاشرے میں بگاڑ پیدا کر رہی ہے پاکستانی عوام آئندہ الیکشن مین ان کے راستے کو روکیں تاکہ مغربی ایجنڈہ ناکام ہو۔