پاکستان اور ترک بحری افواج کے مابین پہلی دوطرفہ مشق اختتام پذیر

11 اپریل 2018

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) پاکستان اور ترک بحری افواج کے مابین شمالی بحیرئہ عرب میں منعقد ہونے والی پہلی دو طرفہ بحری مشق  ترگت ریز  (شمشیر اسلام)  اختتام پذیر ہوگئی ۔  ترک بحریہ کے فریگیٹ ٹی سی جی  گیلیبولو ،  پاکستان نیوی بحری جہازوں  سیف،  اصلت ،  نصر،  قوت،  عظمت اور زرار کے( صفحہ9بقیہ23) علاوہ پاکستان نیول ایوی ایشن کے فکسڈ اور روٹری ونگ ایئر کرافٹ نے مشق میں حصہ لیا۔  پاک فضائیہ کے لڑاکا طیارے بھی اس مشق میں شریک تھے۔ اس مشق کا بنیا دی مقصد دونوں برادر ممالک کی بحری افواج کے مابین مشترکہ آپریشنز کی صلاحیت کو فروغ دینا تھا۔ بحری مشق ترگت ریز  2018 کے دوران بحری آپریشنز کی ایک وسیع رینج کی ریہرسل کی گئی جس میں اینٹی سرفیس،  اینٹی ایئر اور اینٹی سب میرین وار فیئر کے علاوہ مختلف بحری جنگی چالوں اور رابطے کی مشقیں شامل تھیں۔ مشق کے دوران بحری قذاقی کی روک تھام کی ڈرلز بھی کی گئیں جن میں بورڈنگ ٹیموں نے مشکوک بحری جہاز پر بورڈنگ آپریشنز کا عملی مظاہرہ پیش کیا۔ جمہوریہء ترک کے قونصل جنرل  تولگا اکاک نے بھی کھلے سمندر میں ٹی سی جی  گیلیبولو اور پی این ایس اسلط سے اس مشق کا معائنہ کیا۔  ترک قونصل جنرل نے مشق میں شریک  پاکستان اور ترک بحری افواج کے افسروں اور جوانوں کو اس مشترکہ بحری مشق کے کامیاب انعقاد پر مبارک باد پیش کی اور امید ظاہر کی کہ مستقبل میں دونوں افواج کے درمیان یہ مشق ایک مستقل شکل اختیار کرلے گی۔

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...