لاء کالجز، یونیورسٹیوں کا الحاق، فیصل آباد ڈویژن جامعہ پنجاب کے دائرہ اختیار میں کردیا گیا

11 اپریل 2018

اسلام آباد (نمائندہ نوائے وقت) سپریم کورٹ آف پاکستان نے نجی لاء کالجزاور یونیورسٹیوں کے الحاق سے متعلق کیس میںفیصل آباد ڈویژن کوپنجاب یونیورسٹی کے دائرہ اختیار میں شامل کرنے کا حکم دے دیا جبکہ پنجاب اور بلوچستان کے کمشنر ز کو ایک ہفتے میں رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کردی ،عدالت نے اسلام آباد بار کونسل کو مقدمے میں فریق بننے کی اجازت دیدی ، منگل کوجسٹس عمر عطاء بندیال کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے لاء کالجز اور یونیورسٹیوں کے الحاق سے متعلق کیس کی سماعت کی تو سندھ اور خیبرپختونخواکی صوبائی بارکونسلز نے کمشنزکی رپورٹ جمع کروا ئی، سماعت کے دوران عدالت نے اس کیس میں اسلام آباد بار کونسل کی جانب سے مقدمے میں فریق بننے کی استدعا پر اجازت دے دی، اس موقع پر جسٹس عمرعطاء بندیال نے کہا کہ براہ راست نئی درخواستیں نہیں لی جائیں گی، شکایت کی صورت میں پاکستان بار کونسل سے رجوع کیا جائے، عدالت نے کہا کہ بارکونسل کے کمشنزکی رپورٹس آنے کے بعد نظر ثانی کی درخواستوں پرغورکیاجائے گا،عدالت نے فیصل آباد ڈویژن کو پنجاب یونیورسٹی کے دائرہ اختیار میں شامل کرنے کا حکم دیتے ہوئے پنجاب اور بلوچستان کے کمشنزکو ایک ہفتے میں رپورٹ جمع کرانے کی ہدایت کردی ،عدالت نے واضح کیا ہے کہ بارکونسلوں اوریونیورسٹیوں کے ذریعے لاء کالجز کاجائزہ لینے کامقصد غیرمعیاری کالجزکی نشاندہی کرنا ہے، بعدازاں کیس کی مزید سماعت 24اپریل تک ملتوی کردی گئی ۔