پنجاب اسمبلی کی 4 سالہ کارکردگی مایوس کن رہی :محمودالرشید

11 اپریل 2018

لاہور (خصوصی نامہ نگار)قائد حزب اختلاف میاں محمودالرشید نے پنجاب اسمبلی کی4 سالہ کارکردگی کو مایوس کن قرار دیتے ہوئے کہا کہ پنجاب اسمبلی کی قائمہ کمیٹیاں عضو معطل رہیں، ایوان سے منظور کردہ قراردادوں پر رتی برابربھی عمل نہ ہو سکا، قائد ایوان شہباز شریف کی حاضری بھی بڑا سوالیہ نشان رہی۔ محمودالرشید نے کہا کہ جو حکومت ایوان سے منظور کردہ قراردادوں پر بھی عمل نہ کرا سکے حکمرانوں کے نزدیک اسکی بے وقتی کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے، انہوں نے کہا کہ پنجاب اسمبلی نے چار سالوں میں 148 قوانین کو منظور کیا لیکن اپوزیشن کی طرف سے پیش کردہ ہر مثبت ترمیم کو اکثریت کے بل بوتے پر مسترد کردیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ چار سالوں میں پنجاب اسمبلی کا اجلاس29سیشن اور403 دن پر محیط تھا، ایک تو قائد ایوان شہباز شریف نے مسلسل غیر حاضر رہ کر ایوان کا تقدس مجروح کیا۔ دوسرا یہ کہ حکومت کی جانب سے ایوان کو سوالوں کے غلط جوابات بھی دیئے گئے جس پر نا صرف اپوزیشن بلکہ حکومتی اراکین بھی سراپا احتجاج رہے۔