ہیں جگنو چاروں جانب آگہی کے

11 اپریل 2018

خالد یزدانی

ادب و ثقافت کے فروغ میں سرگرمِ علمی، ادبی،اور ثقافتی تنظیم جگنو انٹر نیشنل لاہور ہر ماہ تقریبات کا اہتمام کرتی چلی آرہی ہے گذشتہ دنوں الحمرا اد بی بیٹھک کے زیرِ اہتمام تنظیم کی سربراہ ایم زیڈ کنول کی میزبانی میں جگنو ماہانہ مشاعرہ بیاد راؤ قاسم علی شہزاد (جگنو) کا انعقاد کیا گیا تھا ۔ تقریب کی صدارت معروف استاد شاعر اقبال راہی نے کی جبکہ مہمانانِ خصوصی میانوالی کے ادبی حلقوں کی پہچان ڈاکٹر آصف مغل اور راقم تھے۔ مہمانِ اعزاز میں نوجوان شاعر،طالب علم (کنگ ایڈورڈ میڈیکل کالج، لاہور) ڈاکٹر احمد طلال آصف تھے۔ تقریب کا آغاززین علی ثاقیبی کی تلاوت سے اور ہدیہء نعتِ بحضور سرورِ کائنات، سے ہوا۔ پروگرام کی نظامت حسبِ دستور چیف ایگزیکٹو جگنو انٹر نیشنل ، ایم زیڈ کنول نے کی اورمیزبان کی حیثیت سے سب سے پہلے اپنا کلام نذرِ سامعین کر کے خوب داد سمیٹی۔ پھر باقاعدہ مشاعرہ کاآغاز ہوا۔ اقبال راہی، سید خالد یزدانی، ڈاکٹر آصف مغل، ڈاکٹر احمد طلال مغل، اعجاز اللہ ناز ، محترمہ وکٹوریہ پیٹرک، افضل پارس، حکیم سلیم اختر ملک، شیراز انجم، ڈاکٹر دانش عزیز، ندیم شیخ، فراست بخاری،علی صدف،،رانا کامل، زین علی،امجد علی اور دیگرشعراء کرام نے انتہائی خوبصورت اور روح میں اتر جانے والا کلام پیش کر کے ان ساعتوں کو امر بنا دیا۔ تقریب میں شاعروں، ادیبوں، طلبہ اور ممتاز ادبی و سماجی شخصیات نے شمولیت فرمائی۔ جن میں مقصود چغتائی ،ڈاکٹر عبدالستار چوہدری اور کونپل حنیف نمایاں تھے۔پروگرام کے آخر میں ایم زیڈکنول نے معزز مہمانوں کاشکریہ ادا کیا۔ اس کے ساتھ ہی تکلف تواضع کے ساتھ یہ کانوں میں رس گھولنے والی تقریب اپنے مقررہ وقت پر اختتام پذیر ہوئی احباب نے جگنو انٹرنیشنل کی تمام ٹیم کو مبارکباد دیتے ہوئے خصوصا'' ایم زیڈ کنول کی اس ضمن میں کاوشوں کو سراہا جس کے ثمرمیں چار سال کے عرصے میں یہ تنظیم جو راؤ قاسم علی شہزاد (جگنو) کی یادوں کو جلا بخشنے کے لئے عمل میں آئی۔آج عملی صورت میں جغرافیائی حدود عبور کر کے تمام دنیا سے خراجِ تحسین حاصل کر چکی ہے یہ سب اس کی بانی ایم زیڈ کنول کی شبانہ روز دیدہ ریزی کا صلہ ہے 5 فروری 2018 کو چوتھی سالگرہ کا اہتمام پلاک کے ہال نمبر1 میں کیا گیا۔ اسی طرح کی تقریب میانوالی اورلیہ میں بھی کیا گیا۔ ساری دنیا سے تہنیت کے پیغامات جاری ہوئے۔ غالب اکیڈ می،دہلی سے ڈاکٹر احمد علی برقی اعظمی نے اس حوالے سے خاص طور پر منظوم کلام بھیجا۔ اس تنظیم کے تحت جہاں ماہانہ علمی، ادبی ، شعری نشستوں کا اہتمام کیا جاتا ہے۔ وہیں پنج ریڈیو یو ایس اے سے ہر جمعہ کی شب عالمی آن لائن مشاعرہ کا انعقاد بھی کیا جاتا ہے۔ رائٹرز کی پذیرائی، کتب کا اجرائ￿ اور سالانہ، تقسیمِ ایوارڈ کا اہتمام کیا جاتا ہے۔ سینئر ادباء کی پذیرائی کے ساتھ ساتھ نئے شعرا کو متعارف کرایا جاتا ہے۔ایک خاص بات کہ ان تقاریب میں پابندی وقت کا بھی خاص خیال رکھا جاتا ہے۔ حالیہ تقریب میں بھی اس روایت کو نبھایا گیا۔تقریب میں اقبال رہی نے جو اشعار سنائے ان کو زبدست داد سے نوازا گیا
جہاں رہتا ہے خوشبو کا بسیرا
ہم اک ایسے چمن میں آگئے ہیں
ہیں جگنو چاروں جانب آگہی کے
کنول کی انجمن میں آگئے ہیں