قندوز بمباری کے خلاف مذمتی قرارداد، سرکاری و نجی شراکت داری کا قانون منظور

11 اپریل 2018

کوئٹہ(نمائندہ نوائے وقت) بلوچستان اسمبلی نے افغانستان کے صوبے قندوز میںدینی مدرسے پر بمباری اور معصوم حفاظ کرام کی شہادت کے خلاف مشترکہ مذمتی قرار داداورسرکاری و نجی شراکت داری کا مسودہ قانون کمیٹی سفارشات کے بموجب منظورکرلیا۔بلوچستان اسمبلی کا اجلاس منگل کے روز سپیکر راحیلہ حمیدخان درانی کی زیر صدارت 45منٹ کی تاخیر سے شروع ہوا ۔ اجلاس میں افغانستان کے شہر قندوز میں بمباری میں شہید ہونے والے حفاظ کرام، کوئٹہ میں مسیحی برادری کے افراد کے قتل اور سینئر صحافی جاوید اختر کی مغفرت کے لئے ایوان میں فاتحہ خوانی کی گئی ۔اجلاس میں اپوزیشن رکن شاہدہ رئوف نے مشترکہ قرار داد پیش کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایوان افغانستان کے صوبہ قندوز میں دینی مدرسے کی تقریب دستار بندی پر امریکہ کی وحشیانہ بمباری کی شدید الفاظ میں مذمت کرتا ہے وہ حفاظ کرام جن کے سینوں میں قرآن پاک محفوظ تھا ان بچوں پر امریکہ کی طرف سے شدید بمباری کرنا اور ابدی نیند سلانا اسلام دشمنی کا منہ بولتا ثبوت ہے لہٰذا یہ ایوان اس کھلی دہشت گردی کی شدید الفاظ میں مذمت کرتا ہے اور عالمی برادری سے اس وحشیانہ بمباری کے نوٹس لینے کا مطالبہ کرتا ہے ۔قرار داد کی موزونیت پر بات کرتے ہوئے صوبائی وزیر داخلہ میر سرفراز بگٹی نے کہا کہ افسوس کا مقام ہے کہ افغانستان کی حکومت بھی خونریزی میں شامل تھی قندوز میں مدرسے پر بمباری امریکہ یا اسرائیل نے نہیں بلکہ افغانستان نے کی ۔عالمی برادری مدرسے پر بمباری اور معصوم بچوں کے قتل کا نوٹس لے ۔ سانحہ8اگست کے تمام ملزمان مارے گئے پولیس اور ہزارہ برادری پر حملے کرنے والے گروہ کے ارکان بھی پکڑے گئے مذہب کے نام پر دہشت گردی کا سدباب اسمبلی اور مسجد کے منبر سے ممکن ہے ۔دہشت گردی کے خاتمے کے لئے جامع سیکورٹی پالیسی مرتب کرنا ہوگی دہشت گردی کے خلاف جنگ آسان کام نہیں افغانستان کے علاقے بولدک میں آج بھی دہشت گردی کے کیمپ موجود ہیں بلوچستان اور ملک میں ہونے والی دہشت گردی کے واقعات کی تمام ادائیگیاں افغانستان میں ہوتی ہیں افغانستان کی سرزمین پاکستان کے دشمن ممالک بھی استعمال کررہے ہیں فورسزدہشت گردی کے خلاف کارروائی کررہی ہیں ہم سوئے نہیں رہتے ۔ صوبائی وزیر پرنس احمدعلی نے کہا کہ امریکہ جس طرح مسلمانوں کی آواز بند کرنے کی کوشش کررہا ہے یہ قابل مذمت اقدام ہے امریکہ نے پہلا ڈرون حملہ یمن میں کیا بعد میں افغانستان میں یہ سلسلہ شروع کیا اور ایک سازش کے تحت اسلام کی آواز کو طاقت کے ذریعے دبانے کی کوشش کی ۔قندوز میں جس مدرسے پر بمباری کی گئی اس وقت پندرہ سو حافظ قرآن موجود تھے کیا امریکہ کو اسرائیل کی دہشت گردی نظر نہیں آرہی ہم سمجھتے ہیں کہ جن لوگوں نے یہ عمل کیا ہے وہ دنیا اور آخرت میں رسوا ہوجائیں گے ۔اپوزیشن رکن شاہد ہ رئوف نے کہا کہ امریکہ نے جو کیا ہے اس کی ہم مذمت کرتے ہیں اور افغان صدر نے مدرسے پر ہونے والی بمباری کی مذمت تک نہیں کی مسلم ممالک اب اپنے مفادات کی بجائے مسلمانوں کے مفادات کو مد نظر رکھ کر فیصلے کریں ۔ اے این پی کے پارلیمانی لیڈر انجینئر زمرک خان اچکزئی نے کہا کہ جس طرح قندوز میں نہتے اور معصوم بچوں کو نشانہ بنایا گیا اس واقعے کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے امریکہ دہشت گردی کو ختم نہیں کررہا بلکہ وہ دہشت گردی کو فروغ دے رہا ہے 38سالوں سے ہماری سرزمین دہشت گردی کا نشانہ بنی ہوئی ہے ۔صوبائی وزیر پارلیمانی امور سید آغا رضا نے کہا کہ افغانستان کی سرزمین پاکستان کے خلاف استعمال ہورہی ہے اس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے داخلہ اور خارجہ پالیسیوں کو ٹھیک کرنے کی ضرورت ہے ۔ رکن اسمبلی مولوی معاذ اللہ نے کہا کہ ہم اس واقعے کی مذمت کرتے ہیں قندوز جیسے واقعات پر ہم خاموش رہیں تو پھر ہم کبھی بھی اپنے حق کے لئے آواز نہیں اٹھا سکتے۔ نیشنل پارٹی کے رکن نواب محمدخان شاہوانی نے کہا کہ دنیا جہان میں دہشت گردی کے واقعات ہورہے ہیں نیشنل پارٹی ان واقعات کی مذمت کرتی ہے اب وقت آگیا ہے کہ ہم اپنی پالیسیوں پرنظر ثانی کریں ۔ صوبائی وزیر میر عاصم کرد گیلو نے کہا کہ جس طرح امریکہ نے دنیا بھر میں اسلامی ممالک کو ایک منصوبے کے تحت دہشت گردی کا شکار کیا ہے امریکہ کا انجام بھی جلد بھیانک ہوگا اوراللہ تعالیٰ اس سے حساب لے گا۔جمعیت العلماء اسلام کے سردار عبدالرحمان کھیتران نے کہا کہ افغانستان کے صوبہ قندوز میں پیش آنے والا واقعہ انتہائی افسوسناک اور دردناک ہے جس نے ہر ایک شخص کو رونے پر مجبور کیا معصوم بچوں کی شہادت اور انہیں اس بے دردی سے بمباری کرکے قتل کرنا افسوسناک ہے ۔پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے آغا سید لیاقت نے قرار داد کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ افغانستان میں انقلاب آنے کے بعد وہاں روس آگیا اور تب سے اب تک پشتونوں کا قتل عام جاری ہے بعدازاں13اپریل تک اجلاس ملتوی کردیا گیا ۔
بلوچستان اسمبلی