معاشی ترقی میں آئی کیپ کا کردار اہم ہے‘ گورنر سندھ

11 اپریل 2018

کراچی ( نیوزرپورٹر) گورنر سندھ محمد زبیر نے کہا ہے کہ نجی شعبے میں اگر کوئی سی ایف او 9 ماہ بعد بھی کمپنی کو بہتر ریٹنگ نہیں دے سکتا تو وہ ملازمت پر نہیں رہتا‘ کیا سرکاری ادارے ایسا سخت فیصلہ کر سکتے ہیں؟ معاشی ترقی میں آئی کیپ کا کردار انتہائی اہم ہے‘ چارٹرڈ اکاؤنٹنٹس کی تعداد بڑھنی چاہئے وہ انسٹیٹیوٹ آف چارٹرڈ اکاؤنٹنٹس آف پاکستان (آئی کیپ) کی دی پروفیشنل اکاؤنٹنٹس ان بزنس (پیب) کمیٹی کے تحت سی ایف او کانفرنس 2018ء کے افتتاحی سیشن سے خطاب کر رہے تھے۔ گورنر سندھ نے کہاکہ آئی کیپ کی جانب سے تسلسل سے سی ایف او کانفرنسز کا انعقاد خوش آئند ہے‘ انسٹی ٹیوٹ کا ملکی ترقی میں کردار قابل تعریف ہے۔ انہوںنے کہاکہ کراچی صنعتی حب ہے‘ امن و امان بہت بہتر ہے‘ مجموعی قومی پیداوار میں مزید دو فیصد اضافہ زیادہ مشکل نہیں ہے ہم نی ویارک‘ شکاگو‘ لندن‘ بوسٹن‘ دبئی جا کر کراچی میں سرمایہ کاری لانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ محمد زبیر نے کہاکہ اب ان پروفیشنلز کو چاہئے کہ وہ اس ترقی سے فائدہ اٹھائیں۔ اس سے قبل خطبہ استقبالیہ میں صدر آئی کیپ ریاض رحمان چامڈیا نے سی ایف او کانفرنس کے اغراض و مقاصد بیان کئے۔ انہوں نے کہاکہ اداروں کی سطح پر مضبوط مینٹل ماڈل اہمیت کا حامل ہوتا ہے اس کے بغیر فیصلے کرنا بعض اوقات مشکل ہو جاتے ہیں۔ سابق ڈین و پروفیسر ایمریٹس آئی بی اے ڈاکٹر عشرت حسین نے کہاکہ پاکستانی چارٹرڈ اکاؤنٹنٹس کی دنیا بھر اور ملک بھر میں بہت ڈیمانڈ ہے لیکن ان کی کامیابی کی شرح کم ہے۔ چیئرمین پیب کمیٹی و کونسل ممبر آئی کیپ خلیل اللہ شیخ نے اپنے خطاب میں پاکستان کی معیشت میں آئی کیپ کے کردار پر روشنی ڈالی۔ اس موقع پر کونسل ممبرآئی کیپ و صدر تولہ ایسوسی ایٹس اشفاق تولہ نے آف شور اثاثوں‘ ایگزیکٹو ڈائریکٹر انٹرنل آڈٹ اینڈ کمپلائنس اسٹیٹ بینک پاکستان ریاض نذر علی چنارا نے کرنسی مینجمنٹ‘ بورڈ ممبر و چیئرآڈٹ کمیٹی‘ انٹرنیشنل فیڈریشن آف اکاؤنٹنٹس (آئی ایف اے سی) ڈاکٹر وی نندشروف نے ری سیٹنگ دی اسٹینڈرڈ سیٹنگ ماڈل‘ ان ہانسنگ پبلک ٹرسٹ آر ریسیپی فار چیوس کے موضوع پر اظہار خیال کیا۔