بفرزون میں دن دیہاڑے غیر قانونی واٹرکنکشن

11 اپریل 2018

کراچی (اسٹاف رپورٹر) کراچی میں پانی کی قلت عروج پر پہنچ گئی، واٹر بورڈ اور ڈی ایم سی کی ملی بھگت سے غیر قانونی کنکشن سے شہر میں پانی کے بحران کی صورتحال پیدا ہوگئی ہے۔ گزشتہ روز بفرزون کے علاقے سیکٹر 15اے 4میں واٹر بورڈ کے عملے اور ڈی ایم سی کی آشرباد سے بااثر افراد بلا خوف و خطر غیر قانونی کنکشن حاصل کر رہے ہیں۔ ذرائع کے مطابق واٹر بورڈ کے عملے اور ڈی ایم سی کی جانب سے قانونی طور پر روڈ کٹنگ اور دیگر قانونی دستاویزات کے بغیر غیر قانونی کنکشن حاصل کر رہے ہیں۔ ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ بفرزون سیکٹر 15اے 4میں غیرقانونی کنکشن کی بھرمار ہے جس میں واٹربورڈ کا عملہ ملوث ہے۔ علاقہ مکینوں کی جانب سے شکایت کرنے پر عملہ ٹال مٹول سے کام لیتا ہے، بااثر افراد کے خلاف قانونی کارروائی نہ کرنا انتظامیہ کی ملی بھگت کا ثبوت ہے۔ علاقہ مکینوں نے شکایت کی کہ علاقے میں کئی کئی ماہ پانی سپلائی نہیں کیا جاتا، انتظامیہ کی جانب سے موسم گرما اور رمضان کے معتبر مہینے کا بھی لحاظ نہیں کیا جاتا،تاہم علاقے میں موجود غیر قانونی ہائیڈرنٹس، آر او پلانٹس اور بااثر افراد کو بھاری رشوت کے عیوز 2،2کنکشن دئیے جاتے ہیں۔ جبکہ بفرزون میں غیر قانونی کنکشن ختم کرنے کے لئے انتظامیہ کی طرف سے کوئی قانونی کارروائی نہیں کی جارہی ۔ علاقہ مکینوں نے شکایت کی کہ قانونی طور پر کنکشن لینے والوں کو انتظامیہ کی جانب سے 6ماہ سے زائد کا وقت دیا جاتا ہے اور انہیں روڈ کٹنگ، دیگر قانونی پیچیدگیوں میں پھنسا کر دفتروں کے چکر لگوائے جاتے ہیں دوسری جانب غیر قانونی کنکشن رات و رات لگا لئے جاتے ہیں ۔