حضرت عمر رضی اﷲ تعالیٰ عنہ کے عمل و کردار کو عملی طور پر اپنی زندگیوں میں اختیار کر نے کی ضرورت ہے

Sep 10, 2018

راولپنڈی (نیوز ڈیسک) عید گاہ شریف کے سجادہ نشین و عالم اسلام کے ممتاز روحانی و مذہبی پیشوا پیر محمد حسان حسیب الرحمن نے کہا ہے کہ مسلمانوں کے نئے ہجری سال کی آمد ہے ۔ اﷲکریم حضور نبی ِ رحمت ﷺ کے وسیلہ جلیلہ سے اس آنے والے سال کو تمام اُمت ِمسلمہ اور وطن عزیز پاکستان کیلئے بالخصوص رحمتوں سے بھر پور کر دے ۔ اس سال کے آغاز کو ایک عظیم ہستی حضرت عمر ابن الخطاب رضی اﷲ تعالیٰ عنہ سے نسبت ہے جو مُراد ِ مصطفی ﷺ ہیں اور جن کے بارے میں حضور نبی کریم ﷺ نے ارشاد مبارک فرمایا کہ عمر ؓ میرے ایسے غلام ہیں کہ یہ جس راستے پر چل پڑتے ہیں شیطان وہ راستہ چھوڑ دیتا ہے ۔ تمام طاغوتی اور شیطانی قوتوں کے شکنجے سے نجات پانے کیلئے اُمت مسلمہ آج بھی اگر حضور نبی کریم ﷺ کے ارشاد ِ پاک کے مطابق عدل و کردار ِ فاروقی ؓ کو زندگی کے تمام شعبوں میں اپنا لے تو کوئی وجہ نہیں کہ ان کے راستے میں آنے والی تمام شیطانی قوتیں وہ راستہ چھوڑ کر فرارنہ ہو جائیں ۔ آج ہمیں جس دہشتگردی کی لعنت کا سامنا ہے اُس سے نجات پانے کیلئے عدل فاروقی اکسیر کی حیثیت رکھتا ہے ۔ جب بے گناہ انسانوںکے خون سے ہاتھ رنگنے والوںسے اسلامی قوانین کے مطابق نمٹا جائے گا تو خود بخود ہمارا معاشرہ امن و آتشی کا گہوارہ بن جائے گا ۔جس میںہر انسان کے جان و مال، آبرو اور خون کی حرمت کی ضمانت ہو گی ۔ 22لاکھ مربع میل تک مسلم سلطنت کو فروغ دینے والے حضرت عمر رضی اﷲ تعالیٰ عنہ کی اس بے مثال کامیابی کی واحد وجہ اتباعِ رسول مقبول ﷺ ہے ۔ آج ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم ان عظیم ہستیوں کے عمل و کردار کو عملی طور پر اپنی زندگیوں میں اختیار کر لیں تو کوئی وجہ نہیں کہ ربِ رحمان کی ان تمام رحمتوں سے فیضیاب نہ ہو سکیں جن سے ہمارے اسلاف فیضیاب ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار اُنہوں نے عید گاہ شریف میں منعقدہ فضائل حضرت عمر فاروق رضی اﷲ تعالیٰ عنہ کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا ۔ محفل سے خواجہ وجاہت جمیل ، حافظ بشیر احمد سیالوی اور خلیفہ محمد رمضان نے بھی خطاب کیا ۔ محفل کا اختتام پر پیر محمد نقیب الرحمن نے وطن ِ عزیز کی سلامتی ، خوشحالی ، ترقی ، افواج پاکستان کی سر بلندی اور اتحاد بین المسلمین کیلئے خصوصی دعا کی ۔

مزیدخبریں