ڈرون حملوں، میانمار میں مسلمانوں پر مظالم کیخلاف احتجاجی مظاہرے

10 جون 2013

لاہور (خصوصی نامہ نگار) ڈرون حملوں، میانمار میں مسلمانوں پر ظلم و ستم اور عالم اسلام کی بے حسی کے خلاف گذشتہ روز احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔ مظاہرین نے بینرز اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر نیٹو، امریکہ اور میانمار حکومت کیخلاف نعرے درج تھے۔ مقررین نے کہا کہ پاکستانی شہریوں پر ڈرون بم گرانے اور برما کے مسلمانوں پر ظلم و ستم کے پیچھے ایک ہی عزائم کے لوگ ملوث ہیں۔ لاہور میں اہلحدیث یوتھ فورس نے لاہور بتی چوک میں احتجاجی مظاہرہ کیا، مظاہرین نے بینرز اور کتبے اٹھا رکھے تھے جن پر نیٹو، امریکہ اور میانمار حکومت کے خلاف نعرے درج تھے، مظاہرین نے او آئی سی کی مجرمانہ غفلت پر افسوس کا اظہار کیا اور پاکستانی آرمی چیف کو امریکی ڈرون طیارے گرانے کا حکم دینے کا مطالبہ کیا۔ اس موقع پر اہلحدیث یوتھ فورس کے صدر حافظ ذاکر الرحمن صدیقی نے کہا کہ اقوام متحدہ دوغلی پالیسی کی بجائے برما کے مسلمانوں پر ہونیوالے مظالم کا سلسلہ بند کروائے۔ اقوام متحدہ امت مسلمہ کے جان و مال اور انسانی حقوق کے تحفظ میں بری طرح ناکام ہو چکی ہے۔ علاوہ ازیں ورلڈ پاسبان ختم نبوت کے ناظم اعلیٰ علامہ محمد ممتاز اعوان نے لاہور مرکز تحفظ ختم نبوت میں میانمار کے مسلمانوں کے وحشیانہ قتل عام کے خلاف منعقدہ احتجاجی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے اعلان کیا کہ ورلڈ پاسبان ختم نبوت میانمار میں مسلم نسل کشی اور برما، بھارت دہشت گردی پر عالمی اداروں کی مجرمانہ خاموشی کیخلاف ہر جمعہ اور اتوار کو بھرپور احتجاج، جلسے، جلوس، مظاہرے، ریلیاں نکالی جائیں گی۔ اس سلسلہ میں ایک چار رکنی رابطہ کمیٹی بھی قائم کر دی گئی ہے۔ علاوہ ازیں جمعیت مشائخ پاکستان کے رہنماﺅں ایس اے جعفری، علامہ وقار الحسنین نقوی، علامہ اصغر عارف چشتی، حکیم دلشاد سردار اور دیگر کی قیادت میں ایک زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہاکہ اقوام متحدہ مسلمانوں پر ہونے والے ظلم پر خاموش کیوں ہے انہیں اپنا کردار ادا کرنا چاہئے اور اس قتل عام کو فوری بند کروانا چاہئے۔