وفاقی کابینہ میں چھوٹے صوبوں کو نظرانداز نہیں کیا، پراپیگنڈا بے بنیاد ہے: سرکاری ذرائع

10 جون 2013

اسلام آباد (آئی این پی) سرکاری ذرائع نے وفاقی کابینہ میں چھوٹے صوبوں کو کم نمائندگی دیئے جانے بارے تاثر کو سختی سے رد کرتے ہوئے کہا ہے کہ وفاقی کابینہ میں چھوٹے صوبوں کو نظرانداز نہیں کیا گیا ، سندھ ، بلوچستان اور خیبرپی کے سے منتخب مسلم لیگی ارکان اور اتحادی جماعتوں کے ارکان کو کابینہ میں شامل کیا گیا ہے۔ سرکاری ذرائع نے بعض عناصر کی طرف سے اس حوالے سے کئے جانے والے بے بنیاد پراپیگنڈہ پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا مسلم لیگ (ن) نے سندھ سے وفاقی کابینہ میں پارٹی ٹکٹ پر کامیاب رکن اسمبلی کے علاوہ اتحادی جماعتوں کے دو ارکان کو بھی کابینہ میں شامل کیا۔ ذرائع کے مطابق عبدالحکیم بلوچ مسلم لیگ (ن) کے ٹکٹ پر کراچی سے کامیاب ہوئے اس کے علاوہ نیشنل پیپلزپارٹی کے غلام مرتضیٰ جتوئی نے اپنی پارٹی مسلم لیگ (ن) میں ضم کرکے شمولیت کا اعلان کیا، ان کے علاوہ سندھ سے اتحادی جماعت مسلم لیگ (فنکشنل) کے پیر صدر الدین راشدی کو بھی وفاقی کابینہ میں شامل کیاگیا۔ سندھ سے وفاقی کابینہ میں تین وزراءکو شامل کیاگیا ۔ بلوچستان سے مسلم لیگ (ن) کی ٹکٹ پر دو ارکان لیفٹیننٹ جنرل (ر) عبدالقادر بلوچ اور جام میر کمال منتخب ہوئے ، دونوں کو کابینہ مین شامل کیاگیا جبکہ اسی طرح خیبرپی کے سے سردار یوسف کو وفاقی وزیر اور مرتضیٰ جاوید عباسی کو ڈپٹی سپیکر بنایاگیا، بعض عناصر بلاوجہ بےبنیاد پراپیگنڈا کررہے ہیں کہ کابینہ میں چھوٹے صوبوں کی نمائندگی نہیں ہے ، یہ پراپیگنڈہ سراسر بے بنیاد ہے ، کابینہ میں تمام صوبوں کی نمائندگی موجود ہے۔