گرمی سے مزید 14 افراد ہلاک‘ بدترین لوڈشیڈنگ جاری‘ شیخوپورہ میں واپڈا آفس کا گھیراﺅ

10 جون 2013

لاہور(نیوزرپورٹر+نمائندگان+ایجنسیاں) پنجاب بھر میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ کم نہ ہو سکا اتوار والے دن بھی ہر گھنٹے بعد ایک گھنٹے کے لئے بجلی کی بندش نے شہریوں کا جینا محال کئے رکھا۔ شدید گرمی کے باعث بجلی کی طلب بڑھ کر 17 ہزار330 میگاواٹ رہی ۔ بجلی کی طلب اور پیداوار میں 5240 میگاواٹ کے لگ بھگ فرق کے باعث شہروں میں 12 سے 14 گھنٹے اور دیہاتوں میں 18 سے 20 گھنٹے تک کی بدترین لوڈشیڈنگ کی گئی۔ جبکہ شدید گرمی کا سلسلہ بھی جاری رہا اور مزید 14 افراد جاں بحق اور متعدد بیہوش ہوگئے۔ گرمی سے ہلاکتیں ساہیوال، میانوالی، شیخوپورہ اور رحیم یار خان میں ہوئیں۔ ادھروزارت پانی و بجلی نے جون کے مہینے میں پاور پلانٹس کو تیل خریداری اور بجلی کی ادائیگی کیلئے وزارت خزانہ سے 49 ارب روپے جاری کرنے کی درخواست کی ہے۔ ترجمان وزارت پانی وبجلی کے مطابق جون کے مہینے میں بجلی کی طلب بڑھنے کے باعث وزارت خزانہ سے کہا گیا ہے کہ وہ فنڈز کے اجرا میں تاخیر نہ کرے۔ ادھرلیسکو سسٹم اوور لوڈہونے کے باعث آئے روز گرڈسٹیشن تباہی کی جانب جانے لگے ۔ایک ماہ کے دوران تین گرڈ سٹیشن اوور لوڈ ہونے کی وجہ سے 10سے16گھنٹے تک بند رہے، جس میں بند روڈ ،گرین ٹاﺅن اورجوہر ٹاﺅن کا گرڈ سٹیشن شامل تھا۔ تینوں گرڈ سٹیشن پر آگ لگنے کے باعث 60 لاکھ روپے کا نقصان ہو چکا ہے۔جمعہ کی رات 132 کے وی کے جوہر ٹاﺅن گرڈ میں آگ لگنے سے لیسکو کا تقریباً20 کا نقصان ہوا۔اس وجہ سے جوہر ٹاﺅن اور اس سے ملحقہ پوش علاقوں میں مسلسل 16 گھنٹے کے قریب بجلی بند رہی۔شیخوپورہ میں سینکڑوں شہریوں نے لیسکو فورٹ سب ڈویژن کے دفتر پر دھاوا بول دیا اور ٹائروں کو نذر آتش کرکے ٹریفک بلاک کردی مشتعل مظاہرین نے دفتر کو جلانے کی کوشش بھی کی۔ادھربجلی کی طویل لوڈ شیڈنگ کے باعث لاہور میں پانی کی قلت نے بھی بحرانی صورتحال اختیار کر لی ،اکثر علاقوں میں پانی دستیاب نہ ہونے کے باعث شہری دور دراز علاقوں سے بھر کر لانے پر مجبور ہو گئے ‘ افغان پارک میں ٹیوب ویل کی بورنگ بیٹھنے سے تین روز سے ہزاروں علاقہ مکین پانی کی بوند بوند کو ترس گئے۔ لاہور کے اہم علاقہ سنت نگر کے افغان پارک میں واسا کے ٹیوب ویل کی بورنگ بیٹھ گئی اور تین روز گزرنے کے باوجود اس مسئلے کو حل نہیں کیا جا سکا۔آئی این پی کے مطابق ساہیوال میں شدید گرمی کے باعث 2خواتین سمیت 3 افراد دم توڑ گئے میانوالی میں بھی 2 افراد گرمی کی شدت برداشت نہ کر سکے اور چل بسے۔ فیصل آباد سے نمائندہ خصوصی کے مطابق شہر کی صنعتی تنظیموں اور مزدوروں نے لوڈشیڈنگ کے اس نہ رکنے والے طوفان کے خلاف کل فیسکو ہیڈکوارٹرز کے سامنے احتجاجی دھرنے کا اعلان کر دیا ہے جس میں شہر کی تمام صنعتی اور مزدور تنظیمیں بھرپور حصہ لیں گی۔شےخوپورہ سے نامہ نگار خصوصی کے مطابق درجہ حرارت 50سےنٹی گرےڈ تک پہنچ گےا اس دوران گرمی کی شدت کو برداشت نہ کرتے ہوئے دل کا دورہ پڑنے سے اےک خاتون شرےفاں بی بی سمےت 2افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاع ملی ہےں جبکہ گرمی کے باعث مختلف علاقوں مےں 8افراد کے بے ہوش ہوگئے شہر اور اس کے نواحی علاقوں مےں اتوار کو چھٹی ہونے کے با وجود بجلی کی لوڈ شےڈنگ مےں ذرا بھی کمی نہ ہوئی شہر مےں 4علاقوں مےںبجلی کے ٹرانسفارمر جل جانے کی بنا پر بجلی کی فراہمی معطل رہی شےخوپورہ کے محلہ رسول پورہ مےں گزشتہ 48 گھنٹوں سے بجلی کی بندش کے ستائے سےنکڑوں شہرےوں نے لےسکو فورٹ سب ڈوےژن کے دفتر پر دھاوا بول دےا۔ ادھر رحیم یار خان میں آگ برساتی گرمی نے خاتون سمیت مزید 2 افراد کی جان لے لی۔ درجہ حرارت 47 ڈگری تک پہنچ گیا۔ کوئٹہ سے بیورو رپورٹ کے مطابق اوتھل میں تاجروں نے بجلی کی طویل ترین لوڈشیڈنگ کے خلاف احتجاجاًکوئٹہ کراچی قومی شاہراہ کو ہر قسم کی آمدورفت کیلئے بند کردیا جس کی وجہ سے سڑک کے دونوں جانب گاڑیوں کی لمبی لمبی لائنیں لگ گئیںاور شدید گرمی میں مسافروں کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔
گرمی/لوڈ شیڈنگ