امریکہ‘ چین کے دو روزہ مذاکرات ختم‘ شمالی کوریا کو جوہری اسلحہ سے پاک ماحول کیلئے مضر گیسوں میں کمی کیلئے مل کر کام کرنے پر اتفاق

10 جون 2013

واشنگٹن (نمائندہ خصوصی+ نیوزی ایجنسیاں) امریکی صدر باراک اوباما اور چینی صدر شی جِن پنگ کے درمیان کیلیفورنیا میں ہونے والی دو روزہ سربراہی ملاقات مکمل ہو گئی۔ اس ملاقات میں شمالی کوریا اور سائبر حملوں کے حوالے سے پیشرفت ہوئی ہے۔ امریکہ کی قومی سلامتی کے مشیر تھامس ڈونیلون کے مطابق دونوں صدور نے شمالی کوریا کے جوہری تنازعے کے حوالے سے تفصیلی غور وخوض کے بعد فیصلہ کیا کہ وہ جزیرہ نما کوریا کو جوہری اسلحے سے پاک کرنے کے لیے مِل کر کام کریں گے۔ ڈونیلون کے مطابق چینی صدر نے واشنگٹن حکومت کے تحفظات تسلیم کرتے ہوئے انہیں ایک سنجیدہ مسئلہ قرار دیا۔ وائٹ ہاﺅس کے مطابق صدر اوباما اور شی جن پنگ نے ماحولیاتی تبدیلیوں سے نمنٹنے کے لیے بھی مشترکہ کوششوں پر اتفاق کیا ہے، خاص طور پر ہائیڈروفلوروکاربنز یا سپر گرین ہاﺅس گیسز کی پیداوار کم کرنے کے حوالے سے۔ یہ گیس ایئر کنڈیشنر اور ریفریجریٹرز میں استعمال ہوتی ہے۔وائٹ ہاس سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق، عالمی سطح پر HFC کی 2050 تک کمی 90 گیگا ٹن کاربن ڈائی آکسائیڈ کے برابر تک لائی جائے گی۔ امریکی حکام نے انہیں منفرد، مثبت اور تعمیری قرار دیا ہے۔ قومی سلامتی سے متعلق مشیر ٹام ڈونلن نے کہا کہ امریکی صدر نے اپنے چینی ہم منصب کو متنبہ کیا کہ سائبر جرائم چین اور امریکہ کے تعلقات میں رکاوٹ بن سکتے ہیں۔ اعلامیے میں کہا گیا کہ دونوں ممالک نے پہلی بار ماحولیات کو نقصان پہنچانے والے ہائیڈرو فلورو کاربنز کو کم کرنے کے لئے مل کر کام کرنے پر اتفاق کیا ہے۔ بی بی سی کے مطابق جب صدر اوباما سے بات چیت کے حوالے سے سوال پوچھا گیا تو انہوں نے کہا کہ بات چیت نہایت عمدہ رہی۔ مارچ میں چین کے صدر کا عہدہ سنبھالنے کے بعد شی جن پینگ کی امرکی صدر سے یہ پہلی ملاقات ہے۔ صدر اوباما نے کہا ہماری اتنی جلد ملاقات امریکہ اور چین کے مابین تعلقات کی اہمیت کو ظاہر کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ پرامن چین کا خیرمقدم کرتے ہیں اور ایسے معاشی نظام کے خواہاں ہیں جہاں تمام ممالک کے لئے یکساں قوانین ہوں۔ چینی صدر نے کہا بحرالکاہل کی وسعت میں چین اور امریکہ کے لئے کافی جگہ ہے۔ آن ائن کے مطابق امرکی صدر باراک اوباما نے چین کے صدر ژی جن پنگ کو لکڑی کا بنا ہوا ایک بہت بڑا پارک بنچ تحفے میں دے کر خصت کیا ۔