حکومت کاامتحان

10 جون 2013

مکرمی!حکومت نے اقتدار سنبھال کر کام شروع کردیا ہے سب سے پہلی کانفرنس بجلی کے بحران کے حوالے سے ہوئی جس میں کوئلے سے بجلی پیدا کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے اللہ کرے اس پر جلد از جلد عملدرآمد شروع ہوجائے۔میں ذاتی طور پر دو معاملات کو حکومت کے لئے ٹیسٹ کےس سمجھتا ہوں جن میں پاک ایران گےس پائپ لائن منصوبہ ہے جسے امریکہ اور سعودی عرب کبھی بھی پایہ تکمیل تک پہنچنے نہیں دیں گے اس کے لئے ہر طرح کی ترغیبات کی آفر کی جائے گی۔ جن میں ایک سو مساجد کی تعمیر بھی ہے ۔ادھار تیل کی سپلائی بھی مل سکتی ہے جیسا کہ آمروں کے دور میں ملا کرتا تھااب میاں نواز شریف کے لئے ایک امتحان ہوگا کہ انہوں نے قوم کو اپنے پاﺅں پر کھڑا کرنا ہے یا بھیک اورامداد پر ہی رہنا ہے۔اس منصوبے کی تکمیل خود انحصاری کی طرف لے جائے گی جبکہ دوسرا راستہ روایتی ہی ہے جس پر بدقسمتی سے ہم پچھلی کئی دھائیوں سے چل رہے ہیں۔ دوسرا امتحان کچھ روز تک شروع ہونے والا ہے سابق صدر پرویز مشرف کو بیرونی دباو پر ملک سے باہر بھےجنے کا فیصلہ ہوچکا ہے جبکہ آزادعدلیہ آرٹیکل 6 کا مکمل ٹرائل کرنا چاہتی ہے اوراس کے لئے ہر حد تک جانے کو تیار ہے لیکن اگر حکومت نے عدلیہ کو بائی پاس کرکے پرویز مشرف کو باہر جانے کا محفوظ راستہ دے دیا تو حکومت اور عدلیہ کی محاذ آرائی ہنی مون پیریڈ سے ہی شروع ہوجائے گی ان دو فیصلوں سے موجودہ حکومت کی کارکردگی او مدت کا تعین ہوجائے گا۔( چوہدری عبدالرزاق 101-Wہاوسنگ کالونی چیچہ وطنی)