مشرف غداری کیس: دلچسپ جملے اور وکلا میں گرما گرمی

10 اپریل 2013
مشرف غداری کیس: دلچسپ جملے اور وکلا میں گرما گرمی

اسلام آباد (آئی این پی) سپریم کورٹ میں سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف کے خلاف غداری کا مقدمہ قائم کرنے کیلئے دائر درخواستوں کی سماعت کے موقع پر جسٹس خلجی عارف حسین اور پرویز مشرف کے وکیل احمد رضا قصوری کے درمیان دلچسپ جملوں کا تبادلہ ہوا۔ احمد رضا قصوری نے عدالت کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ان کے م¶کل کے خلاف دائر کردہ درخواستوں کی کاپیاں بھی ابھی مجھے فراہم نہیں کی گئیں تو درخواستوں کی سماعت کس طرح ممکن ہے جسٹس خلجی عارف حسین نے اس پر انہیں مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ قصوری صاحب آپ براہ راست حکم دے دیتے تو اس پر احمد رضا قصوری نے کہا کہ جب آپ لوگ سکولوں میں پڑھ رہے تھے تو میں اس وقت سے وکالت کر رہا ہوں اس پر لاہور ہائیکورٹ بار راولپنڈی بینچ کے سابق صدر اور درخواست گذار احسن الدین شیخ نے کہا کہ عدالت کا احترام سب پر واجب ہے دوران سماعت درخواست گذار اور احمد رضا قصوری آپس میں بار بار الجھتے رہے۔ ایک موقع پر احسن الدین شیخ اور احمد رضا قصوری کے درمیان سماعت کی ابتدا میں جب روسٹرم کے ارد گرد درخواست گذاروں کے وکلا جمع ہوگئے تو احمد رضا قصوری نے کہا کہ یہاں جادوئی ماحول بنانے کی کوشش کی جا رہی ہے میں اس ماحول میں روسٹرم پر نہیں آسکتا۔