موجودہ نظام کے تحت الیکشن مسترد‘ عوام پولنگ ڈے پر دھرنا دیں: طاہرالقادری

10 اپریل 2013

لاہور (خصوصی نامہ نگار) پاکستان عوامی تحریک کے قائد ڈاکٹر محمد طاہر القادری نے کہا ہے کہ جمہوریت کا تسلسل ہی ملکوں کی ترقی اور عوام کو خوشحالی کی منزل تک لے جاتا ہے اور انتخابات ہی اقتدار کی منتقلی کا بہترین ذریعہ ہوتے ہیں مگر بدقسمتی سے پاکستان میں نظام انتخاب کی شفافیت کی بجائے صرف انتخابات کی رسم پر اصرار کیا جاتا ہے جس کے باعث ہم جمہوریت کے ثمرات سے محروم چلے آ رہے ہیں۔ موجودہ انتخابی نظام اور سٹیٹس کو ایک دوسرے کے محافظ ہیں۔ فوجی آمروں کے شب خون مارنے کا سب سے بڑا ذمہ دار بھی موجودہ نظام انتخاب ہے۔ انتخابات کی رسم کے بعد پارلیمنٹ دوبارہ چند خاندانوں کے ہاتھوں یرغمال بنے گی۔ معلق پارلیمنٹ میں عوام کے حقوق معلق ہی رہیں گے اور لٹیروں کا کاروبار خوب چمکے گا۔ وہ پاکستان عوامی تحریک لاہور کی ایگزیکٹو کونسل کے اجلاس میں لندن سے ٹیلی فونک گفتگو کر رہے تھے۔ ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا کہ آئین کے آرٹیکل 218اور 62,63 کے عملی نفاذ، 30دن کی سکروٹنی اور عدالت عظمیٰ کی 8جون 2012 کی Judgement کے مطابق الیکشن کرانے کےلئے پاکستان عوامی تحریک کی سیاسی جدوجہد پاکستان کی تاریخ کا روشن باب ہے۔ ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا کہ الیکشن ڈرامہ جمہوریت کے ماتھے کا داغ ٹھہرے گا۔ موجودہ نظام کے تحت الیکشن پاکستان کے وجود کو خطرات لاحق کر دیں گے اس لئے عوام موجودہ نظام کے تحت ہونے والے الیکشن کو ذمہ داری کے ساتھ مسترد کریں اور موجودہ نظام کے خلاف اپنا جمہوری فرض ادا کرنے کےلئے پولنگ ڈے پر پاکستان عوامی تحریک کے دھرنوں میں شرکت کریں۔