جعلی ڈگری کیس: مفرور سابق ایم پی اے رضوان گل نے گرفتاری دیدی‘ جیل منتقل

10 اپریل 2013

سرگودھا + ڈیرہ غازیخان + قصور (نوائے وقت نیوز + بیورو رپورٹ + نامہ نگاران) جعلی ڈگری کیس میں مفرور سابق ایم پی اے رضوان گل نے رضاکارانہ طور پر گرفتاری دیدی جبکہ سابق رکن صوبائی اسمبلی سردار میر بادشاہ خان قیصرانی کے خلاف جعلی ڈگری کیس میں عدم حاضری پر عدالت نے رجسٹرار اور کنٹرولر سندھ یونیورسٹی جام شورو کے وارنٹ جاری کرتے ہوئے مقدمہ کی سماعت آئندہ سماعت 12 اپریل تک ملتوی کر دی۔ رضوان گل کا تعلق مسلم لیگ (ن) سے ہے۔ واضح رہے کہ ایک ہفتہ قبل رضوان گل کو جعلی ڈگری کیس میں سیشن کورٹ نے 3 سال قید اور 5 ہزار روپے جرمانے کی سزا دی تھی۔ سزا کے بعد رضوان گل عدالت سے فرار ہوگئے تھے۔ کل اچانک منظرعام پر آئے، عدالت کے سامنے پیش ہونے سے پہلے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ رضاکارانہ طور پر گرفتاری دے رہے ہیں، میری ڈگری جعلی نہیں ہے، اگر ثابت ہو گئی تو سیاست چھوڑ دونگا۔ عدالت پر اعتماد ہے۔ امید ہے انصاف ملے گا۔ رضوان گل کو ہتھکڑی لگا کر جیل بھیجنے کے بعد دوبارہ جج نے کمرہ عدالت میں بلایا اور ان کو جیل منتقلی کا تحریری حکم نامہ بھی دیا۔ رضوان گل نے کہا کہ آج بدھ کو لاہور ہائیکورٹ میں سزا کے فیصلے کیخلاف اپیل دائر کرینگے۔ علاوہ ازیں مسلم لیگ (ن) کے سابق ایم این اے را¶ مظہر حیات کے خلاف جعلی ڈگری کیس کی سماعت آج ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج طارق افتخار احمد کی عدالت میں ہو گی۔ علاوہ ازیں تونسہ شریف سے سابق رکن صوبائی اسمبلی سردار میر بادشاہ خان کےخلاف جعلی ڈگری کیس کی سماعت ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج وجاہت حسین خان نے کی، عدالت نے طلبی کے باوجود عدم حاضری پر رجسٹرار محمد نواز ناریجو اور کنٹرولر سندھ یونیورسٹی جام شورو نعیم طارق کے وارنٹ جاری کر دئےے جبکہ عدالت نے میر بادشاہ خان قیصرانی کے وکیل کی طرف سے دائر 3 الگ الگ درخواستوں پر فیصلہ محفوظ کر لیا۔