شیرازی‘ ملکانی گروپ نے پیپلز پارٹی چھوڑ دی‘ اویس ٹپی کے خلاف الیکشن لڑنے کا اعلان

10 اپریل 2013

ٹھٹھہ (نوائے وقت نیوز) شیرازی اور ملکانی گروپ نے آزاد حیثیت سے الیکشن لڑنے کا اعلان کر دیا۔ بتایا جاتا ہے شیرازی اور ملکانی گروپ پیپلز پارٹی کی جانب سے ٹکٹوں کی تقسیم پر مطمئن نہیں ہو سکے۔ شیرازی برادران نے ایک ماہ قبل پیپلز پارٹی پارٹی میں شمولیت اختیار کی اور اب ٹکٹوں کی تقسیم پر اختلاف پر ایک ماہ بعد ہی پیپلز پارٹی چھوڑ دی جبکہ سابق صوبائی وزیر غلام قادر ملکانی بھی پی پی چھوڑ کر شیرازی گروپ میں شامل ہو گئے اور ملکانی برادران نے بھی آزاد حیثیت سے الیکشن لڑنے کا اعلان کر دیا۔ ملکانی گروپ کو شیرازی گروپ میں ضم کر دیا گیا۔ شیرازی گروپ کا کہنا ہے پیپلز پارٹی نے لاڑکانہ کے جلسے میں دل آزاری کی۔ شیرازی گروپ نے اعلان کیا اویس مظفر ٹپی کے خلاف آزاد حیثیت سے الیکشن لڑیں گے۔آن لائن کے مطابق شیرازی گروپ کے رہنما اعجاز علی شاہ، شفقت حسین اور غلام قادر ملکانی نے ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے پیپلزپارٹی کو ٹکٹیں واپس کردیں اور کہا ٹھٹھہ ضلع کی اہمیت اور عوام کے مفاد میں فیصلہ کرتے ہوئے ہم نے پیپلزپارٹی سے مستعفی ہوکر اتحادی کی صورت میں الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا ہے اس موقع پر سید شفقت حسین شیرازی نے کہا ہے ایک شخص لینڈ مافیا کا سرپرست ہے اور ٹھٹھہ ضلع کی47ہزار ایکڑ اراضی پر قبضہ کررکھا ہے جس کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چل رہا ہے۔ میں اس معاملے پر بات نہیں کروں گا۔ لینڈ مافیا کے سرپرست بنے ہوئے لوگ ٹھٹھہ پر قبضہ کرنا چاہتے ہیں۔ پی ایس 88میں جو پیپلزپارٹی کا امیدوار ہے ٹھٹھہ کی عوام ان کے لیے اچھا تاثر نہیں رکھتی ہے اس لیے ہم نے سندھ کو اور ٹھٹھہ کو بچانے کیلئے عوام کی مفاد میں یہ فیصلہ کیا ہے۔ ہم پر عوام کا بھی دباﺅ تھا کہ آزاد الیکشن میں حصہ لیا جائے۔ شیرازی برادری نے ٹھٹھہ کی 2قومی اسمبلی اور5صوبائی حلقوں کیلئے اپنے امیدواروں کا اعلان کردیا۔