63,62 عملدرآمد کیس: فل بنچ تشکیل‘ آج سماعت کرے گا‘ الیکشن کمشن کی آنکھیں کھل گئی ہونگی: ہائیکورٹ

10 اپریل 2013

لاہور (وقائع نگار خصوصی) چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس عمر عطا بندیال نے آرٹےکل 62 اور 63 پر عملدرآمد کے لئے دائر درخواستوں پر فل بنچ تشکیل دے دیا جو آج 10 اپریل سے کےس کی سماعت کرے گا ۔ مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے رےمارکس دیتے ہوئے کہا کہ ےہ اہم نوعیت کا معاملہ ہے اس لئے مذکورہ درخواستوں کی سماعت فل بنچ کو کرنی چاہئے۔ عدالت نے کیس چیف جسٹس کو بھیجتے ہوئے الیکشن کمشن کو اپیلیں دائر کرنے والے امیدواروں کی فہرست مرتب کرنے کا حکم دیا۔ عدالت نے کہا کہ ٹریبونل اور فل بنچ کو نیب، ایف بی آر، سٹیٹ بنک اور نادرا ریکارڈ فراہم کریں۔ امےدواروں کی اہلےت کا فےصلہ عدالت نے کرنا ہے۔ عدالت اس بارے میں جائزہ لے گی کہ رےٹرننگ افسر نے رےکارڈ کا جائزہ لےا بھی ہے ےا نہےں۔ نےب، اےف بی آر، سٹےٹ بنک اور نادرا کے نمائندے عدالتی کارروائی مےں موجود رہےں اگر الےکشن کمشن کی آنکھےں پہلے بند تھےں تو اب کھل گئی ہوں گی۔ الیکشن کمشن کی جانب سے جواب داخل کروایا گیا کہ ایف بی آر، نیب اور سٹیٹ بنک سمیت دیگر اداروں سے امیدواروں کے متعلق تمام تر تفصیلات اکٹھی کر کے ریٹرننگ افسران کو فراہم کر دی گئیں تھیں تاہم وہ ریکارڈ ہائی کورٹ میں پیش نہیں کیا جا سکا۔ عدالت نے ریمارکس دئیے کہ سب کو ملکر نظام کو ٹھیک کرنا ہے الیکشن کمشن مرکزی ادارہ ہے عدالتیں اس سے تعاون کریں گی۔ عدالت نے قرار دیا کہ آئینی ترامیم کی روشنی میں عوامی نمائندگی ایکٹ میں تبدیلی ہونی چاہئے تھی مگر الیکشن کمشن نے کچھ نہیں کیا جس کی وجہ سے ریٹرننگ افسران کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔