3 سال میں لوڈشیڈنگ ختم‘ 90 روز میں بلدیاتی الیکشن کابینہ 17 رکنی ہو گی: تحریک انصاف کا منشور

10 اپریل 2013
3 سال میں لوڈشیڈنگ ختم‘ 90 روز میں بلدیاتی الیکشن کابینہ 17 رکنی ہو گی: تحریک انصاف کا منشور

اسلام آباد (نوائے وقت نیوز+ایجنسیاں) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے 12نکاتی انتخابی منشور کاا علان کردیا ہے جس کے تحت اقتدار میں آکر 90روز میں بڑی کرپشن کا خاتمہ، بلدیاتی الیکشن کراکر اختیارات کو نچلی سطح پر منتقل، ریلوے کی وزارت ختم ، پی ٹی وی، پی آئی ڈی اور ریڈیو پاکستان، پی آئی اے کو حکومتی اثر ورسوخ سے الگ کرکے کارپوریشن بنانے، قوم کو امریکی جنگ اورغلامی کے نظام سے نجات، بجلی کی لوڈشیڈنگ کا تین برسوں میں خاتمہ، 17وزارتیں، ٹیکس شرح بڑھانے کی بجائے ٹیکس نیٹ میں اضافہ، اداروں سے کرپشن کے خلاف، تعلیم، صحت، ٹیکس محصولات، انصاف اور توانائی میں اضافے کیلئے ایمرجنسی لگائی جائے گی ۔ عمران خان نے کہا ہے ہمسایہ ممالک کے ساتھ پرامن برادرانہ تعلقات استوار ، ملک کوحقیقی فلاحی اسلامی ریاست بنائیں گے، پیپلزپارٹی اور ن لیگ نے ملک کو تباہ کردیا وہ 90سال میں بھی ملکی مسائل کو حل نہیں کر سکتیں۔ اس موقع پر تحریک انصاف کے صدر جاوید ہاشمی، وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی، مرکزی رہنما جہانگیر ترین، اسد عمر، نعیم الحق، شفقت محمود، شریں مزاری سمیت دیگر موجود تھے۔ عمران خان نے کہا معاشرے کی تمام اکائیوں کو انصاف اور مساوی حقوق، صحت، تعلیم، روزگار کے مواقع جبکہ جان ومال کا تحفظ فراہم کیا جائے گا، پاکستان کو سٹیٹس کو کا خاتمہ کرکے قائداعظمؒ اور علامہ اقبالؒ کے افکار کے مطابق حقیقی فلاحی اسلامی ریاست بنائیں گے جس میں تمام پاکستانیوں کو ان کے بنیادی حقوق میسر ہوں گے، ہمسایہ ممالک کے ساتھ پرامن برادرانہ تعلقات کو استوار کیا جائے گا جبکہ دیگر ممالک کے ساتھ باہمی احترام، ہم آہنگی، شفاف اورخودمختاری پر مبنی تعلقات کو فروغ د یا جائے گا۔ انہوں نے کہا تحریک انصاف عوام کو بااختیار بنانے کےلئے اختیارات کو نچلی سطح تک منتقل کرے گی اور دیہاتوں تک گورننس کا نظام رائج کرے گی ، تمام ترقیاتی منصوبوں کا کنٹرول بلدیہ کو دے گی ، غریب اور بوڑھے شہریوں کے لئے بنیادی صحت کی دیکھ بھال کی فراہمی بلامعاوضہ ہو گی، دہشت گردی ملک کی بقا کےلئے خطرہ بن چکی ہے جس سے ترجیحی بنیادوں پر نمٹا جائے گا، دوسروں کی جنگ میں فریق نہیں بنیں گے، ایسی قومی پالیسی تشکیل دیں گے جس کے تحت تمام بکھرے ہوئے پاکستانیوں کو یکجا کرنے میں ملے گی ، قومی وسائل کو عوامی فلاح کے منصوبوں پر خرچ کرےں گے۔ انہوں نے کہا تمام مسائل کے حل کےلئے مذاکرات کا راستہ اپنایا جائے گا۔ بڑے زمینداروں پر ٹیکس کا نفاذ یقینی بنائیں گے۔ زمین کا تمام ریکارڈ کمپیوٹرائزاڈ کرکے کسانوں کو پٹواریوں سے چھٹکارا دلائیں گے اور شفاف انداز میں کسانوں کو زرعی قرضہ جات کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے گا۔ انہوں نے کہا تحریک انصاف زراعت سمیت محنت کشوں، اقلیتوں، نوجوانون، خواتین اور معذور افراد جو بدقسمتی سے معاشرہ کا پسا ہوا طبقہ ہیں پر خصوصی توجہ دے گی اور ان کو بنیادی حقوق فراہم کرکے ان کو معاشرہ کا کارآمد حصہ بنائے گی ۔ انہوں نے کہا غریب اور بوڑھے شہریوں کے لئے بنیادی صحت کی دیکھ بھال کی فراہمی بلامعاوضہ ہو گی۔ ملک میں یکساں نظام تعلیم لائیں گے جبکہ پانچ برسوںمیں تعلیم کا بجٹ 2 فیصد جی ڈی پی سے 5 فیصد رکھا جائے گا۔ خواتین کی تعلیم پر خصوصی توجہ دیں گے اور پانچ برسوں تک ملک بھر میں سکولوں کی تعداد میں دوگنا کریں گے۔ نوائے وقت نیوز/ نیٹ نیوز کے مطابق منشور میں کہا گیا ہے تحریک انصاف اقتدار میں آ کر نیا پاکستان بنائے گی ، امیر غریب کا فرق ختم کریں گے۔ نئے پاکستان میں تمام شہریوں کو مساوی حقوق حاصل ہوں گے۔ منشور میں کہا گیا ہے قائداعظمؒ کے وژن اور علامہ اقبالؒ کے خواب پر نیا پاکستان بنائیں گے۔ انصاف ہماری بنیادی ترجیح ہو گی۔ منشور میں کہا گیا ہے دہشت گردی کے خلاف جنگ سے پاکستان کو نکالا جائے گا۔ نیا پاکستان کسی سے جنگ نہیں لڑے گا۔ پوری دنیا جوہری ہتیھاروں کو ترک کرے گی تو تحریک انصاف بھی ایسا کرے گی ۔ تمام پڑوسیوں سے امن و برابری کا رشتہ قائم کیا جائے گا۔ منشور میں کہا گیا ہے کسی ایم این اے، ایم پی اے اور جج کو مفت پلاٹ نہیں دیا جائے گا۔ تعلیمی نظام کو لوکل گورنمنٹ کے تحت کریں گے۔ ڈرون حملوں کی مخالف پالیسی اپنائی جائے گی ۔ کراچی سمیت تمام ملک کو اسلحہ سے پاک کریں گے۔ منشور میں مزید کہا گیا ہے ریلوے کی وزارت ختم کر دی جائے گی ۔ دفاعی بجٹ پر پارلیمنٹ میں بحث کی جائے گی ۔ گورنر ہاﺅس، وزیراعظم ہاﺅس کو بند کر دیا جائے گا۔ اقتدار میں آ کر قوم کا پیسہ بچائیں گے اور سادگی اپنائیں گے بجلی، گیس چوری کے خلاف سخت قوانین بنائیں گے۔