3 سالہ بچی کو حبس بے جا میں رکھنے کا مقدمہ،2 پھوپھےاں،چچا گرفتار

09 ستمبر 2017

اسلام آباد ( وقائع نگار) اسلام آبادہائی کورٹ نے تین سالہ بچی کو حبس بے جا میں رکھنے کے مقدمے مےں بچی کی دو پھوپھےاں اورچچا کو گرفتار کروا کر جےل بجھوادےاہے عدالتی حکم کے باوجود کمسن بچی منزا آصف کو پیش کرنے کی بجائے دبئی پہنچا دیا گیاعدالتی کاروائی شروع ہوئی تو فرےق دوئم کے کونسل بےرسٹر مسعود نے عدالت کو بتاےا کہ بچی کے والد آصف گزشتہ روز دوبئی سے آکر بچی کو اپنے ساتھ دوبئی لے گےا ہے کونسل نے عدالت کو بتاےا کہ بچی کے والد نے انہےں خود فون کرکے بتاےا ہے کہ اس نے ملتان سے بچی کو لےاہے اور دوبئی چلاگےاہے عدالت نے استفسار کےا کہ بچی کا نام ای سی اےل مےں شامل ہونے کے باوجود وہ ملک سے باہر کےسے گئی ہے پولےس نے عدالت کو بتاےاکہ ہم نے عدالت کو نام وزارت داخلہ کے متعلقہ سےکشن تو پہنچا دےا تھا فاضل جج نے رےمارکس دےتے ہوئے کہا کہ عدالت ابھی اتنی بے اختےار نہےں ہوئی ہے کہ بچی کو بازےاب نہ کرواےا جاسکے فاضل عدالت نے پولےس کو بچی کو دوبئی سے بازےاب کروانے کے لےے قانونی کاروائی کرنے کا حکم دےتے ہوئے قرار دےا کہ عدالت فرےقےن نے جھوٹ بول کر عدالت کو گمراہ کرنے کی کوشش کی بچی کہاں ٹھہری آصف کے گھر والے اس سے بخوبی آگاہ تھے فاضل عدالت نے بچی کے چچا اور دو پھوپھےاں کو عدالت سے گرفتار کروا کر جےل بجھواتے ہوئے کےس کی سماعت ملتوی کردی ہے ۔