محمد یوسف کی وفات پرلوک ورثہ میڈیا سینٹر میں تعزیتی ریفرنس

09 ستمبر 2017

اسلام آباد(کلچرل رپورٹر)لوک ورثہ نے اسلام آباد کی نامور اور ادبی شخصیت محمد یوسف کی وفات پرلوک ورثہ میڈیا سینٹر میں تعزیتی ریفرنس کاانعقاد کیا جس میں ملک کے نامور ادیبوں، شاعروں اور لکھاریوں نے محمد یوسف کی اسلام آباد میں کتب بینی کو فروغ دینے اور عوام میں کتاب سے محبت کا جذبہ قائم کرنے کے اعتراف میں انہیں خراج تحسین پیش کیا۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان اکادمی ادبیات کے چئیرمین پروفیسر قاسم بگھیو نے کہا کہ اسلام آباد کے دل میں واقع یوسف صاحب کی دکان اہل فکر کا ڈیرا تھی ، جہاں اہل علم بیٹھ کے ادب، تاریخ، فلسفہ اور سیاست کے پہلوں پر تبادلہ خیال کرتے تھے۔لوک ورثہ کی ایگزیکٹیو ڈائریکٹر ڈاکٹر فوزیہ سعید نے اس موقع پر خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ محمد یوسف کے جانے سے اسلام آباد کے ادبی حلقے میں بڑا خلا پیدا ہوا ہے۔کتاب کے لیے ان کے دل میں پائی جانے والی محبت اور خلوص شاہد ہی کسی میں پائی جائے۔ نامور شاعر اور کالم نگار اظہار الحق نے کہا کہ یوسف مرحوم اس شہر کی تہذیب اور ثقافت کے معماروں میں سے تھے ۔ انہوں نے ایک دنیا کی کتابوں سے پیاس بجھائی ہے۔ وہ کتابوں کے تاجر ہی نہیں بلکہ ان کے عالم بھی تھے۔