میانمارکے مسلمان مہاجرین کےلئے امدادی کاموں کا آغاز کر دیا

09 ستمبر 2017

اسلام آباد(نامہ نگار) مسلم ہینڈز کے کنٹری منیجرسید ضیا ءالنور نے کہا ہے کہ بنگلہ دیش کے چیریٹی کمیشن نے مسلم ہینڈز کو کاکس بازار کے علاقے میں مقیم روہنگیا مسلمانوں کے لئے امدادی کام کی اجازت دےدی ہے ۔ اس سے پہلے بنگلہ دیشی حکومت نے میانمار حکومت کی پالیسی پر عمل کرتے ہوئے تما م فلاحیتنظیموں پر پابندی لگا دی تھی ۔ سید ضیاءالنور کا کہنا ہے کہ مسلم ہینڈزمیانمار میں روہنگیا مسلمانوں کے لئے 2008سے فلاحی خدمات سر انجام دے رہی ہے جبکہ راکھائن کے علاقے میں ہونے والے مسلم کش فسادات کے متاثرین کے لئے 2012سے امدادی کام جاری ہے ۔حالیہ دنوں میں ہونے والی بربریت میں میانمار کی حکومت نے فلاحی تنظیموں پر پابندی لگا دی تھی جس کے باعث مسلم ہینڈز کو بھی اپنے رضاکارانہ کام کو روکا پڑا تھا۔ ان کا مزید یہ کہنا تھا کہ گزشتہ برس مسلم ہینڈز کی جانب سے روہنگیا مسلمانوں کے لئے 30 ہزار پاﺅنڈ کے رمضان پیکج کا اہتمام کیا گیا تھا ۔ جبکہ میانمار کی راکھائن ا سٹیٹ میں مسلمانوں کے لئے 700عارضی گھر بھی تعمیر کئے گئے۔