عراق : فوج کا حدیثہ ڈیم پر کنٹرول‘ داعش مخالف جرگے پر خودکش حملہ 18 ہلاک پچاس زخمی

09 ستمبر 2014

بغداد (بی بی سی/ این این آئی ) عراق کی فوج نے کہا ہے کہ اس نے امریکی بمباری کے بعد دفاعی لحاظ سے اہم حدیثہ ڈیم کے اردگرد ایک بہت بڑے علاقے کو دولتِ اسلامیہ کے شدت پسندوں سے خالی کرا لیا ہے۔ جیور میں قبائلیوں اور سکیورٹی فوج میں جھڑپ ہوئی۔ دھماکوں کی کسی نے ذمہ داری قبول نہیں کی۔ امریکی بمباری کے بعد داعش کے جنگجو پسپا ہو گئے‘ دفاعی لحاظ سے اہم علاقے کو فورسز نے خالی کرا لیا گیا۔ عراق کے شہر دولحیہ میں دولت اسلامی عراق و شام کے مخالین کے جرگے میں خودکش حملے کے نتیجے میں 18 افراد ہلاک جبکہ 50 سے زائد زخمی ہوگئے۔ عراق کے دارالحکومت بغداد کے نواحی شہر دولحیہ میں داعش مخالف جرگہ ہورہا تھا کہ پہلے ایک خودکش حملہ آور نے بارود سے بھری گاڑی کو رکاوٹوں سے ٹکرا دیا جس کے بعد پیچھے آنے والے دوسرے حملہ آور نے اندر داخل ہوکر اپنے آپ کو اڑا ڈالا۔ مقامی انتظامیہ نے دونوں دھماکوں میں 18 افراد کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے جبکہ 50 سے زائد افراد زخمی ہوگئے۔ واضح رہے دولحیہ میں داعش مخالف جنگجو انتہائی منظم ہیں جب کہ خودکش حملے کے وقت بھی مقامی قبائل اور داعش مخالف عسکریت پسندوں کے درمیاں عراقی حکومت کی حمایت کیلئے جرگہ جاری تھا۔