سیلاب متاثرین کیلئے امداد کی پیشکش قابل قدر ہے: نوازشریف کا مودی کو خط

09 ستمبر 2014

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) وزیراعظم نوازشریف نے اپنے بھارتی ہم منصب نریندر مودی کی طرف سے سیلاب اور بارشوں کے متاثرین کیلئے امداد کی پیشکش کو قابل قدر قرار دیا ہے۔ نریندر مودی کے نام جوابی خط میں وزیراعظم  نوازشریف نے کہا ہے کہ وہ شکریہ کے ساتھ انہیں مطلع کرتے ہیں کہ 7ستمبر کو مودی کا خط انہیں موصول ہو گیا تھا جس میں بدترین بارشوں اور سلاب کے متاثرین کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کیا گیا ہے۔ دفتر خارجہ نے وزیراعظم کے بیان کی تفصیلات جاری کی ہیں جن کے مطابق یہ جوابی خط 8ستمبر کو بھیجا گیا ہے۔ جوابی خط میں وزیراعظم نوازشریف نے بطور خاص کشمیر کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ ’’میں نے کشمیر کے متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا ہے اور سیلاب اور بارشوں سے ہونے والی تباہی اور عوام کی مشکلات دیکھ کر مجھے گہرا دکھ پہنچا ہے۔ مجھے علم ہے کہ کنٹرول لائن کے دوسری طرف بھی بارشوں اور سیلاب کے باعث کشمیروں نے بھاری جانی اور مالی نقصان برداشت کیا ہے۔ ہماری نیک تمنائیں اور  دعائیں  مصیبت   میں گھرے  ان متاثرہ خاندانوں کے ساتھ ہیں، ہم  جس بھی طریقہ سے ممکن ہوا ان کے بچائو اور بحالی کیلئے  تمام تر مدد فراہم کرنے کیلئے تیار ہیں۔ بدقسمتی سے جنوبی ایشیا دنیا بھر میں سب سے آفات کا شکار خطہ ہے۔ اب جبکہ ہم امن و استحکام کے مشترکہ مقاصد  کے حصول کی جانب پیشرفت کرنے والے ہیں تو ساتھ ہی ہمیں  ان مسلسل سیلابوں کی  وجوہات پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے  اپنے عوام کو قدرتی آفات سے بچانے  کی تیاری کرنی چاہئے۔ قدرتی آفات سے بچائو کے بندوبست میں قریبی تعاون کو  اس خطہ میں امن و  ترقی کے ایجنڈا کاحصہ ہونا چاہئے۔ نجی ٹی وی کے مطابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ مشکل گھڑی میں نریندر مودی کی جانب سے اظہار یکجہتی قابل تعریف ہے‘ کشمیر میں سیلاب سے ہونے والی تباہ کاریوں پر دکھ ہوا۔ مشکل کی گھڑی میں مدد کا جذبہ قابل قدر ہے، سیلاب کی تباہ کاریوں پر آپ کی ہمدردی کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔ میں نے خود کشمیر کے سیلاب زدہ علاقوں کا دورہ کیا اور وہاں سیلاب سے ہونے والی تباہ کاریاںدیکھ کر انتہائی دکھ ہوا ہے۔ لائن آف کنٹرول کی دوسری طرف کشمیریوں کے نقصانات سے آگاہ ہوں۔