پاکستان اور برطانیہ کے مابین تجارتی حجم میں 20 فیصد اضافہ ہوا ہے: برطانوی ڈپٹی ہائی کمشنر

09 ستمبر 2014

کراچی (آن لائن) کراچی میں تعینات برطانیہ کے ڈپٹی ہائی کمشنر اور ڈائریکٹر ٹریڈ وسرمایہ کاری جون اے ٹک نوٹ نے کہا ہے کہ پاکستان اور برطانیہ کے مابین تجارتی حجم میں 20 فیصد اضافہ ہوا ہے اور دوطرفہ تجارت کو مزید فروغ دینے کیلئے کراچی، حیدرآباد، سیالکوٹ، پشاور اور کوئٹہ میں بزنس سینٹرزکاقیام عمل میں لایا جائیگا جس کے مثبت نتائج برآمد ہونگے۔ یہ بات انہوں نے گزشتہ شب عفیف گروپ کے چیئرمین راشد احمد صدیقی کی جانب سے دئیے گئے عشائیے کے موقع پرکہی۔ جون اے ٹک نوٹ نے کہا کہ برطانیہ کی خواہش ہے کہ پاکستانی عوام خوشحالی اور ترقی کی جانب گامزن ہوں اسی لئے پاکستان میں برطانیہ کی متعددکمپنیاں جنمیں سٹینڈرڈ چارٹرڈ، یونی لیور، شیل اور دیگر اپنی خدمات انجام دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ برطانیہ اور پاکستان کے مابین خوشگوار تعلقات قائم ہیں۔ اس موقع پر ٹریڈ ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے چیف ایگزیکٹو ایس ایم منیرنے کہا کہ ٹی ڈی اے پی ملکی برآمدات کے فروغ کیلئے سرگرم ہے اور برطانیہ میں پاکستانی مصنوعات کی زیادہ سے زیادہ برآمدات کیلئے اپنے ہرممکن اقدامات کررہا ہے جس کے مثبت نتائج برآمد ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نوازشریف ملکی معاشی ترقی کیلئے کوشاں ہیں لیکن دھرنے اور جلوس معاشی تباہی کا باعث بنتے جا رہے ہیں۔