سیلاب: جسٹس منصور کمشن کی رپورٹ پبلک کیوں نہیں کی گئی، محمود الرشید کے وزیراعلیٰ سے سوالات

09 ستمبر 2014

لاہور(خصوصی رپورٹر + سپیشل رپورٹر) تحریک انصاف کے مرکزی نائب صدر میاں محمود الرشید نے کہا ہے کہ تحریک انصاف پنجاب متاثرین سیلاب کی ہر ممکن مدد کرے گی، فنڈ ریزنگ کیلئے اپنی مدد آپ کے تحت کمیٹیاں قائم کر دی گئی ہیں، انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب ساڑھے تین سال قبل 2010 میں جنوبی پنجاب میں سیلاب سے ہونیوالی تباہی پر بننے والے جسٹس منصور علی شاہ کمشنکی سفارشات پر عملدرآمد کرتے تو آج قیمتی جانی و مالی نقصانات سے بچا جا سکتا تھا، گزشتہ روز پبلک سیکرٹریٹ میں اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب سے 3سوالات پوچھے کہ بتایا جائے جسٹس منصور علی شاہ کمشن کی  سیلاب پر رپورٹ پبلک کیوں نہیں کی گئی؟ دوسرے سفارشات میں جن افراد کو نام لے کر تباہی کا ذمہ دار ٹھہرایا گیا تھا ان کے خلاف کیا کارروائی کی گئی؟ اور کمشن نے جو سفارشات دی تھیں ان پر کس حد تک عمل ہوا؟ انہوں نے افواج پاکستان کے جوانوں کو جان ہتھیلی پر رکھ کر ریلیف سرگرمیاں جاری رکھنے پر زبردست خراج تحسین پیش کیا، انہوں نے کہا کہ حکمران عوام کے خون پیسنے کے ٹیکسوں پر چلنے والے پارلیمنٹ کے بے مقصد مشترکہ اجلاس کو ختم کر کے یہ پیسہ متاثرین سیلاب کی مدد اور بحالی کیلئے خرچ کریں۔ انہوں نے کہا کہ جوڈیشل کمشن قائم کرنے میں شیر حکمران کمشنر کی رپورٹس آنے پر گیدڑ بن جاتے ہیں۔ سیلاب کی طرح نواز حکومت بھی ایک آفت ہے، اس سے نجات بھی ضروری ہے۔