حکمران اور سیاستدان اختلافات ترک کرکے سیلاب متاثرین کی مدد کریں: حافظ سعید

09 ستمبر 2014

لاہور (خصوصی رپورٹر) امیر جماعت الدعوۃ حافظ محمد سعید نے گزشتہ روز سیلاب سے متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا اور اپنے رضاکاروں کی امدادی سرگرمیوں کا جائزہ لیا۔ اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حافظ محمد سعید نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں جنگی بنیادوں پر ڈیم تعمیر کرکے پاکستان کو معاشی طور پر اپاہج بنانے کی خوفناک منصوبہ بندی پر عمل پیرا ہے۔ اس کی آبی جارحیت سے پاکستان کی زراعت و صنعت شدید خطرات سے دوچار ہے۔ انڈیا نے لداخ میں ڈیم مکمل کرلیا تو اسلام آباد بھی محفوظ نہیں رہے گا۔ جماعۃ الدعوۃ کے رضاکار سیلاب سے متاثرہ ہر علاقے میں امدادی سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہیں۔ موٹر بوٹس کے ذریعے سینکڑوں افراد کو ریسکیو کیا گیا ہے۔ متاثرین کو ان کے سامان اور مویشیوں سمیت محفوظ مقامات پر منتقل کرنے کے علاوہ پکی پکائی خوراک، صاف پانی اور دیگر اشیاء تقسیم کی جارہی ہیں۔ حکمران و سیاستدان باہمی اختلافات ترک کرکے سیلاب متاثرین کی مدد کا فریضہ سرانجام دیں۔ وہ سوموار کو سیلاب متاثرہ علاقوں کے دورہ کے بعد رانا ٹائون میں فلاح انسانیت فائونڈیشن کی طرف سے لگائے گئے امدادی کیمپ پر پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔ حافظ محمد سعید نے سیلاب متاثرہ خاندانوں میں خشک راشن اور بچوں میں کھانے پینے کی اشیاء بھی تقسیم کیں۔ راشن ایپکا یونین پنجاب کے صدر میاں محمد مصطفی کی طرف سے دیا گیا۔ وزیر آباد سے نامہ نگار کے مطابق  حافظ محمد سعید نے وزیرآباد میں فلاح انسانیت کے متاثرین سیلاب زدگان کے کیمپ کا دورہ کیا۔ اس موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے حافظ سعید نے کہا کہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے پہلے پانی چھوڑا پھر امداد کی پیشکش کرکے پاکستانی قوم سے مذاق کیا ہے۔ انڈیا کو چناب پرڈیموں کی تعمیر سے نہ روکا گیا تو پاکستا ن تباہ ہو جائے گا، وہ مختلف حیلوں بہانوں سے پاکستان کی معیشت برباد کرنا چاہتا ہے۔ انکا کہنا تھا کہ جس طرح قومی اسمبلی میں لیڈران جمہوریت کے نام پر اکٹھا ہو گئے ہیں انہیں ڈیموں کی تعمیر پر بھی اتحاد کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔ بعدازاں انہوں نے پل گیمن پر سیلاب زدگان میں راشن تقسیم کیا۔