گڈو میں شاہ عبداللطیف یونیورسٹی کے زیر اہتمام بی اے اور بی ایس سی کے سالانہ امتحانات کے دوران بوٹی مافیا سرگرم نظر آیا

09 دسمبر 2014 (19:19)
گڈو میں شاہ عبداللطیف یونیورسٹی کے زیر اہتمام بی اے اور بی ایس سی کے سالانہ امتحانات کے دوران بوٹی مافیا سرگرم نظر آیا

یہ کیا ہو رہا ہے،،، یہ ہے قوم کے وہ معمار جن کے اوپر مستقبل کی ذمہ داریاں ہیں، گڈو میں بی اے اور بی ایس سی کے امتحانات شروع ہوئے تو بوٹی مافیا ایک بار پھر سرگرم ہو گیا،حکومت کے نقل کی روک تھام کے دعوے دھرے کے دھرے نظر آئبوٹی مافیا کے افراد امتحانی مراکز میں بیٹھے طلبہ کو دروازوں اور کھڑکیوں سے سوالات کے جوابات اور کتابوں کے صفحات اہم فریضہ سمجھ کر دیتے رہے۔امتحانی پرچے کے دوران پانی پلانےآنے والے افراد بھی پانی کے ساتھ 'بوٹیوں' اور'پھروں' کا 'کاروبار 'کرنے میں مگن نظر آئے۔  اساتذہ کی ملی بھگت سے پرچہ حل ہو کر سینٹرز کے اندر امیدواروں کو ملتا رہپولیس والے بھی امیدواروں کو حل شدہ پرچے پہنچاتے رہے، امیدوار نقل کے لئے موبائل فون کا بھی استعمال کرتے نظر آئے، مراکز کے اندر طلبا و طالبات موبائل فونز، گائیڈ بْکس اور پھروں کا بے دھڑک استعمال کرتے رہے۔۔۔امتحانات میں نقل مکاری کرنے والے طالب علموں کی حوصلہ شکنی از حد ضروری ہے۔ اس ضمن میں حکومت اور محکمہ تعلیم کی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ امتحانی نظام کو شفاف بنانے کے لیے ٹھوس لائحہ عمل مرتب کرے اور نقل ماری کی حوصلہ شکنی کرے