شہباز شریف نے کچی آبادیوں میں گھر بنانے کیلئے قرض حسنہ کے پائلٹ پراجیکٹ کی منظوری دیدی

09 دسمبر 2014
شہباز شریف نے کچی آبادیوں میں گھر بنانے کیلئے قرض حسنہ کے پائلٹ پراجیکٹ کی منظوری دیدی

لاہور (خصوصی رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے صوبے کے محروم معیشت طبقات خصوصاً کچی آبادیوں میں پلاٹ کے مالکان کو گھر بنانے کیلئے قرض حسنہ دینے کے پائلٹ پراجیکٹ کی منظوری دے دی ہے،گھر بنانے کیلئے قرضہ دینے کے پائلٹ پراجیکٹ کی منظوری گزشتہ روز اعلیٰ سطح کے اجلاس میں دی گئی جس کی صدارت وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے کی۔ چیئرمین پنجاب حلال ڈویلپمنٹ اتھارٹی جسٹس (ریٹائرڈ) خلیل الرحمن خان نے قرض حسنہ پروگرام اورلائیوسٹاک کی ترقی کیلئے فیڈ لاٹ فیٹننگ کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی۔ وزیراعلیٰ پنجاب نے چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات کو ہدایت کی کہ قرض حسنہ دینے کے پروگرام کے حوالے سے حتمی طریقہ کار جلد تیار کیا جائے اور اس ضمن میںجامع سفارشات مرتب کر کے پیش کی جائیں۔ اجلاس کے دوران قرضے کی زیادہ سے زیادہ حد 2 لاکھ روپے تک مقرر کرنے کی تجویز پیش کی گئی۔ شہباز شریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ محروم معیشت طبقات کے معیار زندگی کو بلند کرنا حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے اور اس ضمن میں پنجاب حکومت نے پہلے بھی متعدد ٹھوس اقدامات کئے ہیں۔ لائیوسٹاک اور زراعت انتہائی اہم شعبے ہیں جنہیں پائیدار بنیادوں پر فروغ دے کر معیشت کو مستحکم کیا جا سکتا ہے۔ پنجاب حکومت نے لاہور میں جدید ترین سلاٹر ہائوس قائم کیا ہے جس سے شہریوں کو حفظان صحت کے مطابق گوشت کی فراہمی یقینی بنائی جارہی ہے۔ لائیوسٹاک کے شعبہ کی ترقی کیلئے حلال مصنوعات کی برآمدات پر خصوصی توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے ہدایت کی کہ مویشی پال فارمرز کیلئے کارپوریٹ فارمنگ متعارف کرانے پر توجہ دی جائے، لائیوسٹاک و زراعت کے شعبوں میں ویلیوایڈڈ کو فروغ دیا جائے تاکہ پاکستان عالمی ایکسپورٹ مارکیٹ میں اپنا نمایاں مقام حاصل کرسکے۔ اجلاس میں محروم معیشت طبقات خصوصاً کچی آبادیوں میں پلاٹ کے مالکان کو گھر بنانے کیلئے قرضے دینے کے پروگرام اور لائیوسٹاک کے شعبہ کی بہتری کے حوالے سے تجاویز کا جائزہ لیا گیا۔ علاوہ ازیں شہباز شریف نے کہا ہے کہ پینے کے صاف پانی کی فراہمی کا منصوبہ انتہائی اہمیت کا حامل ہے جس کا تعلق براہ راست عوام کی صحت سے جڑا ہوا ہے، وہ گذشتہ روز صوبے میں پینے کے صاف پانی کی فراہمی کے منصوبے پر پیش رفت سے متعلق اعلیٰ سطح کے اجلاس کی صدارت کررہے تھے۔ اجلاس میں پینے کے صاف پانی کی فراہمی کیلئے 307 واٹر فلٹریشن پلانٹس لگانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ پہلے مرحلے میں شمالی اور جنوبی پنجاب کے اضلاع میں واٹر فلٹریشن پلانٹس لگائے جائیں گے۔ شہباز شریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پینے کے صاف پانی کی فراہمی کے منصوبے کے تحت واٹر فلٹریشن پلانٹس لگانے کے پروگرام پر تیز رفتاری سے عملدر آمد یقینی بنایا جائے اور منصوبے کو جلد سے جلد مکمل کیا جائے۔ وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ منصوبے پر موثر انداز میں عملدرآمد کیلئے جامع میکانزم تشکیل دیا جائے اور تھرڈ پارٹی آڈٹ کا نظام وضع ہونا چاہئے تاکہ منصوبے کی موثر مانیٹرنگ یقینی بنائی جاسکے۔ علاوہ ازیں شہبازشریف نے کہا ہے کہ کرپشن ترقی کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے اور بدعنوانی کی اس لعنت کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کیلئے معاشرے کے تمام طبقات کو حکومت کے ساتھ مل جل کر جدوجہد کرنا ہوگی۔ حکومت پنجاب نے سرکاری سطح پر شفافیت ومیرٹ کے فروغ اور بدعنوانی کے خاتمے کیلئے موثر اقدامات اٹھائے ہیں۔ شہباز شریف نے ’’انٹرنیشنل  اینٹی کرپشن ڈے‘‘ کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا کہ ماضی میں  ہونے والی کرپشن کے ناسور نے ملک کی بنیادیں کھوکھلی کردی ہیں، بدعنوانی معاشرے میں سرایت کرجائے تو ادارے تباہ ہوجاتے ہیںتاہم مسلم لیگ (ن) کے دور حکومت میں عالمی اداروں نے بھی کرپشن میں کمی کی سنددی ہے اور موجودہ حکومت کو یہ کریڈٹ جاتا ہے کہ کرپشن کا ایک بھی سکینڈل اس کے دامن پر نہیں ۔ غیر جانبدار عالمی اداروں نے بھی کرپشن اور بدعنوانی میں کمی کیلئے کیے جانے والے موثر اقدامات کی تعریف کی ہے۔  پنجاب حکومت نے ہر سطح پرشفافیت اور میرٹ کو فروغ دیا ہے اور حکومت کا دامن کرپشن کے داغ سے پاک ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے معاشرے سے کرپشن کا خاتمہ اور حکومتی کارکردگی کی ہر سطح پر شفافیت کو یقینی بنانا مسلم لیگ(ن) کی اولین ترجیحات میں شامل ہے۔