لندن کانفرنس تبدیلی کی دہائی میں داخل ہونے کا مثبت آغاز ہے: برطانوی ہائی کمشنر

09 دسمبر 2014

اسلام آباد (سپیشل رپورٹ) پاکستان میں برطانوی ہائی کمشنر فلپ بارٹن نے کہا ہے لندن میں افغانستان کے مسئلہ پر ہونے والی کانفرنس تبدیلی کی دہائی میں داخل ہونے کا ایک مثبت آغاز ہے۔بین الاقوامی برادری نے ایک مرتبہ پھر ایک محفوظ اور پرامن افغانستان کے قیام کیلئے اپنی طرف سے بھرپور حمایت کا اعلان کیا ہے۔برطانوی ہائی کمشنر گزشتہ روز برطانوی ہائی کمشن میں افغانستان سے متعلق برطانوی سفیر جانان موسیٰ زئی کے ہمراہ ایک بریفنگ دے رہے تھے۔ بریفنگ میں آفتاب شیرپاؤ‘ محمود خان اچکزئی اور دوسرے رہنماؤں نے شرکت کی۔ برطانوی ہائی کمشنر نے کہا کہ بین الاقوامی برادری کو لندن کانفرنس میں نئی افغان حکومت سے متعارف ہونے کا موقع ملا۔ وزیراعظم نوازشریف نے نئی افغان حکومت کے مستقبل کے بارے میں پالیسی اور ویژن کی تعریف کی ہے۔ پاکستان اور افغانستان دونوں نے علاقے میں امن اور استحکام کیلئے مل جل کر کام کرنے کا عہد کیا۔ افغانستان کے سفیر جانان موسیٰ زئی نے اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ افغان حکومت اور عوام برطانیہ کی طرف سے بین الاقوامی سطح پر افغانستان کیلئے حمایت کے حصول پر ان کا شکریہ ادا کرتے ہیں افغان سفیر نے کہا کہ 2015 ء سے 2024ء تک کو تبدیلی کا عشرہ قرار دیا گیاہے۔ اس دوران برطانیہ اور بین الاقوامی برادری نے افغانستان میں امن استحکام اور خوشحالی کے لئے اپنی حمایت کا اعلان کیا ہے۔