نواز شریف نے 10 سالہ جلاوطنی، تلخ تجربوں سے کچھ نہ سیکھا: منور حسن

09 دسمبر 2013
نواز شریف نے 10 سالہ جلاوطنی، تلخ تجربوں سے کچھ نہ سیکھا: منور حسن

لاہور (خصوصی نامہ نگار) جماعت اسلامی کے امیر سید منور حسن نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی کی حکومت نے پانچ سال کے عرصے میں جو بدنامی سمیٹی تھی، مسلم لیگ ن صرف چھ ماہ میں عدم مقبولیت کی ان حدوں کو پار کرچکی ہے، نوازشریف نے دس سالہ جلاوطنی اور تلخ تجربوں سے کچھ نہیں سیکھا، ملک دشمن عناصر پاکستان میں فرقہ وارانہ فسادات کروانا چاہتے ہیں لیکن ہر جگہ شیعہ سنی باہمی محبت اور اخوت سے دشمن کی سازشوں کو ناکام بنا رہے ہیں، بلوچستان کے عوام نے جس طرح بلدیاتی انتخابات میں اپنے اعتماد کا اظہار کیا ہے وہ قابل ستائش ہے، اب پنجاب سمیت باقی صوبوں کو بھی بلوچستان کے نقش قدم پر چلتے ہوئے بلدیاتی انتخابات جلد از جلد کروانے کی کوشش کرنی چاہئے۔ ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ نواز شریف گزشتہ تیس سال سے کسی نہ کسی حوالے سے حکومت میں شامل چلے آرہے ہیں لیکن ابھی تک وہ غیر سنجیدہ رویے کو چھوڑنے کیلئے تیار نہیں، جس پارٹی کو پتہ تھا کہ وہ آئندہ اقتدار سنبھالنے والی ہے اسے سنجیدگی سے قومی مسائل کے حل کیلئے اپنا ہوم ورک کرنا چاہئے تھا مگر مسلم لیگ نواز نے اقتدار سنبھالتے ہی غربت اور مہنگائی کے مارے عوام پر جی ایس ٹی اور ٹیکسوں میں بے تحاشا اضافے کا بوجھ لاد دیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت روزانہ چھ ارب روپے کے نوٹ چھاپ رہی ہے جس سے ملک میں افراط زر اور مہنگائی کا وہ طوفان آئے گا کہ جس پر قابو پانا کسی کے بس میں نہیں رہے گا۔
منور حسن