ایل پی جی کوٹہ کیخلاف درخواست واپس لینے کیلئے مجھے بھاری رقم کی پیشکش کی گئی: خواجہ آصف

09 دسمبر 2013
ایل پی جی کوٹہ کیخلاف درخواست واپس لینے کیلئے مجھے بھاری رقم کی پیشکش کی گئی: خواجہ آصف

لاہور (آئی این پی) وفاقی وزیرپانی بجلی ودفاع خواجہ محمد آصف نے کہا ہے لاپتہ افراد کا معاملہ حل کرنا ہماری ذمہ داری ہے جو پوری کی جائے گی اور بہت جلد اس پر قانون سازی بھی کر لی جائے گی‘ پرویز مشرف کے 12 اکتوبر 1999ءکے غیر آئینی اقدامات کی وجہ سے لاپتہ افراد سمیت دیگر مسائل پیدا ہوئے‘ لوگوں کو لاپتہ کرنا آئین سے ماورا اقدام ہے اور کوئی مہذب معاشرہ اس کی اجازت نہیں دیتا‘ لاپتہ افراد میں سے کچھ افغانستان بھی جا چکے ہیں‘ ایل پی جی کوٹہ کرپشن میں سپریم کورٹ نے جرنیلوں، سیاستدانوں اور جن کے خلاف بھی کارروائی کا حکم دیا ہے ان کے خلاف قانون کے تحت کارروائی کی جائے گی‘ مجھے انتخابی مہم کے دوران سپریم کورٹ سے ایل پی جی کوٹہ کیخلاف دی جانیوالی درخواست واپس لینے کے بدلے بھاری رقم کی پیش کش کی گئی جسے میں نے ٹھکرا دیا‘ وزیراعلی شہباز شریف میرے قائد ہیں بجلی کے بحران کے حل کیلئے سنجیدہ اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ ایک انٹرویو میں خواجہ آصف نے کہا لاپتہ افراد میں سے پانچ افراد ایسے ہیں جن کے ہم انتہائی قریب پہنچ چکے ہیں اور ان میں سے کچھ افراد ایسے بھی ہیں جو ملک چھوڑ کر افغانستان جا چکے ہیں ، 8/9 ایسے بھی ہیں جن کے بارے میں کوئی سراغ نہیں مل رہا، دو افراد جیلوں میں ہیں۔ جب ان سے سوال کیا گیا لوگوں کی رائے ہے کہ آپ کی حکومت چیف جسٹس افتخار چودھری کے جانے کا انتظار کر رہی ہے ،اس کے بعد لاپتہ افراد کا معاملہ دبا دیا جائے گا تو اس پر خواجہ آصف نے کہا عدلیہ کو افراد سے جوڑنا اور چیف جسٹس کے جانے کے انتظار کی باتیں کرنا عدلیہ کی تضحیک ہے۔ آن لائن کے مطابق علاوہ ازیں نجی ٹی وی پروگرام میں اظہار خیال کرتے ہوئے وفاقی وزیر نے کہا ملک میں پانی کیلئے اقدامات نہ کئے گئے تو 10 سے 15 سالوں میں پانی کا قحط پیدا ہو جائے گا، کالا باغ ڈیم صرف اتفاق رائے سے ہی بن سکتا ہے۔رات 8 بجے اگر مارکیٹیں بند ہو جائیں تو 12 سو میگاواف بجلی بھی بہت ہوسکتی ہے۔ حکومت اس بحران سے نمٹنے کیلئے بھرپور اقدامات کررہی ہے بجلی کے منصوبوں پر کام جاری ہے دیامر بھاشا ڈیم منصوبے کیلئے پیسے مل جائیں گے۔ بجلی چوری روکنے کے لئے اقدامات کر رہے ہیں۔
خواجہ آصف

روحانی شادی....

شادی کام ہی روحانی ہے لیکن چھپن چھپائی نے اسے بدنامی بنا دیا ہے۔ مرد جب چاہے ...