ایران پاکستان اور شمالی کوریا کی طرح ایٹمی ہتھیار نہیں بنائے گا: اوباما

09 دسمبر 2013

واشنگٹن (آئی این پی + این این آئی+ اے این این) امریکی صدر اوباما نے اسرائیل کے اس خدشے کو مسترد کیا ہے کہ ایران اس طرح ایٹمی ہتھیار بنا سکتا ہے جس طرح پاکستان اور شمالی کوریا نے بنائے۔ امریکی صدر کا کہنا ہے کہ تہران کے ایٹمی پروگرام کا تصدیقی میکانزم انتہائی مثالی ہے اور اس کیلئے دھوکہ دینا ممکن نہیں۔ گزشتہ روز دسویں سالانہ سبان فورم کی میٹنگ میں خطاب کی مزید تفصیلات کے مطابقایٹمی پروگرام کے حوالے سے دنیا کو ایران پر دبائو نہیں ڈالنا چاہیے بلکہ انہیں باوقار راستہ فراہم کیا جائے۔ ایران کو فوجی اور معاشی دبائو کے تحت جھکایا نہیں جا سکتا، امریکی صدر نے اپنے موقف کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ ایران کو تمام تر مراعات دینی چاہیئں، تاکہ وہ اپنے ایٹمی معاملات کو حل کر سکے۔ انہوں نے کہا کہ عالمی برادری کو حقیقت پسند ہونا پڑے گا۔ بروکنگز انسٹیٹیوٹ کے مڈل ایسٹ پولیٹیکل سینٹر میں ایک تقریب سے خطاب اور اپنے ایک بیان میں   امریکی صدر نے اعتراف کیا کہ  ایران کے جوہری تنازعے کا مثالی حل ناممکن ہے  میں ہر ایک کو یہ بات سمجھانا چاہتا ہوں کہ ہم ایران کے جوہری مسئلے کا سب کے لیے قابل قبول مثالی حل تلاش نہیں کر سکتے۔