جمعیت علمائے اسلام فے کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ انتخابات کے ڈیڑھ سال بعد دھاندلی کا شور مچانا بچپن کی سیاست کرنے جیسا ہے

08 نومبر 2014 (19:11)

ملتان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ عمران خان خیبرپی کے میں اپنی ناکامی چھپانے کے لیے احتجاجی سیاست کر رہے ہیں اس وقت قوم کا واسطہ بچپن کی سیاست سے پڑا ہوا ہےملک میں اس وقت غیر سنجیدہ سیاست کی جا رہی ہےملک کو دھرنوں سے جس قدر نقصان پہنچا ہے، اتنا چالیس برسوں کی کرپشن سے نہیں ہوامولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ جمہوریت کے خلاف دھرنوں کی خطرناک تحریک ختم ہو گئی ہے،،،تھر کی صورتحال انتہائی افسوسناک ہے،پیپلز پارٹی کو اس کی ذمہ داری قبول کرنی چاہیے، چند لوگوں کو قربانی کا بکرا نہیں بنانا چاہیے، انہوں نے کہا کہ نئے ڈی جی آئی ایس آئی کا تقرر معمول کی بات ہے اور ان سے اچھی توقعات وابستہ ہیں، سربراہ جے یو آئی نے کہا کہ قصور میں مسیحی جوڑے کو قتل کرنے والوں کو سخت سزا ملنی چاہیے، کسی بھی شخص کو یہ حق حاصل نہیں ہے کہ وہ قانون ہاتھ میں لیتے ہوئے کسی دوسرے کو قتل کردےمولانا فضل الرحمن کا کہنا تھا کہ دنیا میں دہشتگرد تنظیمیں امریکا کی ضرورت ہیں، جبکہ چین پاکستان کا قابل دوست ہے جس نے ہماری ہر موقع پر مدد کی ہے،