حکمرانوں نے بلوچستان کے متاثرین زلزلہ کو بے یارومددگار چھوڑ دیا‘ پریس کلب پر احتجاجی کیمپ 8ویں روز بھی جاری

08 نومبر 2013

کراچی( اسٹاف رپورٹر) جناح اسپتال میں زیر علاج آواران زلزلہ متاثرین کے لواحقین اور زخمیوں کا احتجاج کیمپ کراچی پریس کلب میں 8ویں دن بھی جاری رہا متاثرین کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے جناح اور سول  اسپتال میں زیر علاج زلزلہ زدگان کی امدادکے لئے فی کس ایک لاکھ روپے دینے کا اعلان کیا تھا اس اعلان کو ایک ماہ گزر چکا ہے تاہم حکومت سندھ محکمہ ہیلتھ کی جانب سے صرف 14 زخمیوں کو رقم دی گئی۔ باقی 42 زخمی ابھی تک اعلان کردہ چیکس سے محروم ہیں مریضوں کے لواحقین نے سیکریٹری کے روئیے کے خلاف 24 اکتوبر کو کراچی پریس کلب کے سامنے دھرنا اور احتجاج کا سلسلہ شروع کردیا تھا جو بدستور جاری ہے متاثرین کے مطابق جناح اور سول اسپتال میں زیر علاج بیشتر مریضوں کو فارغ کیا گیا ہے تاہم ان کا علاج جاری ہے او رمتاثرین نور ویلفیئر کی مدد سے کراچی حب ، وندر اور دیگر علاقوںمیں کرائے کے مکانوںمیں رہائش پذری ہیں نور ویلفیئر کے چیئرمین سید اقبال عمر ہلالی نے وزیراعلیٰ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اعلان کردہ رقم کی ادائیگی کے سلسلے میںمتعلقہ افسران سے باز پرس کریں۔